Solved Cases

2 10, 2019

معدہ کی خرابی، اچانک موت کا ڈر، ہارٹ اٹیک اور سانس بند ہونے کا فوبیا – ہومیوپیتھک دوا اور کامیاب علاج – حسین قیصرانی

By |2020-09-21T15:46:49+05:00October 2, 2019|Categories: Gastrointestinal, Homeopathic Awareness, Homeopathy in Urdu, Mental Health, SOLVED CASES|2 Comments

(کمپوزنگ اور رواں اردو ترجمہ: مہرالنسا) ڈاکٹر حسین قیصرانی! السلام علیکم! جیسا کہ میں نے آپ کو فون پر بتایا تھا کہ آج کل مجھے صحت کا پریشان کن مسئلہ درپیش ہے۔ مجھے سینے میں بائیں جانب درد کا احساس ہوتا ہے۔ کبھی کبھی یہ درد اتنا پریشان کرتا ہے کہ مجھے ایمرجنسی میں ہسپتال جانا پڑتا ہے۔ یہی معاملہ پاکستان میں ہوتا ہے کہ جب چھٹیوں پر آیا ہوتا ہوں اور یہی کچھ انگلینڈ میں۔ تمام ٹیسٹ کروا چکا ہوں اور کسی ٹیسٹ میں کچھ نہیں آیا۔ عام لوگوں کے لئے یہ بات بڑی خوشی کی ہوتی ہے کہ سب میڈیکل ٹیسٹ کلیر ہیں مگر میں کہتا ہوں کہ کچھ پتہ تو چلے خرابی کیا اور کہاں ہے تاکہ اُس مسئلے کا علاج شروع ہو سکے۔ مجھے برے اور ڈراؤنے خواب بہت ستاتے ہیں۔ سونے سے پہلے موت کا ڈر اور دل کے دورے یعنی ہارٹ اٹیک کا ڈر لگا رہتا ہے۔ سخت ڈراؤنے خوابوں اور موت کے خوف کی وجہ سے صحیح طریقے سے سو نہیں پاتا اور تقریباً ہر رات ایک دو بار زور دار چیخ کے ساتھ نیند سے جاگ جاتا ہوں۔ ڈاکٹرز کہتے ہیں کہ مجھے معدے کا کوئی مسئلہ نہیں ہے لیکن میں جب [...]

27 09, 2019

نفسیاتی کشمکش، کنفیوژن، تذبذب اور خودکلامی کا مستقل عذاب – ایک سچی کہانی – کامیاب علاج

By |2019-09-28T00:15:59+05:00September 27, 2019|Categories: Homeopathic Awareness, Homeopathy in Urdu, Mental Health, SOLVED CASES|0 Comments

"اب تم زیادتی کر رہی ہو وہ تمہیں منانے کے لیے آیا تھا نا پھر کیوں نہیں مانی۔" "میں زیادتی کر رہی ہوں ۔۔۔۔۔۔۔۔ میں؟ تم بھی مجھے ہی الزام دے رہی ہو۔"  "نہیں میں الزام نہیں دے رہی۔ میں تو بس تمہیں یہ سمجھا رہی ہوں کہ جب اس نے پہل کر لی تھی تو تم بھی قدم بڑھا لیتی۔" "اچھا آج اتنے دنوں بعد انہیں مجھے منانے کا خیال آ گیا وہ بھی تب جب میں نے خود آگے بڑھ کر بات کر لی ورنہ انہیں تو آج بھی فرق نہ پڑ تا وہ تو آج بھی انجان بنے رہتے۔ انہیں خود سے تو کبھی ضرورت محسوس نہیں ہوئی مجھے منانے کی, مجھ سے بات کرنے کی۔" "تم بھول رہی ہو اس نے اس دن بھی تم سے بات کرنے کی کوشش کی تھی پر تم نے جواب نہیں دیا تو پھر وہ بھی خاموش ہو گیا اور بدتمیزی کتنی کی تھی تم نے اس کے بلانے پر وہ پھر بھی خاموش رہا۔ اور آج اگر تم نے خود سے بات شروع کر ہی لی تھی تو پھر قصہ ختم کر دیتی پھر وہی باتیں دہرانے کی اور نئے سرے سے ایک مدعا بنانے کی کیا ضرورت تھی؟۔" "کیا منایا تھا، ہیں، بتاؤ مجھے ۔۔۔۔۔۔۔۔ کیا منایا تھا انہوں نے مجھے۔ ایک دفعہ بس فارمیلٹی پوری کرنے کے لیے کہہ دیا کہ بات [...]

4 08, 2019

سانس میں رکاوٹ، کمر درد، انگزائٹی، الرجی، غصہ، کان کی آوازیں اور معدے کی سخت خرابی – کامیاب کیس – حسین قیصرانی

By |2019-08-08T11:09:57+05:00August 4, 2019|Categories: Homeopathic Awareness, Homeopathy in Urdu, Mental Health, Respiratory, SOLVED CASES, Testimonials|0 Comments

کیس پریزینٹیشن، فیڈ بیک کے رواں اردو ترجمہ اور کمپوزنگ کے لئے محترمہ مہرالنسا کا شکریہ۔ ------------ آپ نے کبھی کسی ماہر شعبدہ باز کو دیکھا ہے جو ہاتھوں میں لمبی چھڑی تھامے ایک تنی ہوئی رسی پر، ہزاروں کے مجمع میں انتہائی پُر اعتماد انداز، انتہائی پھرتی اور کامیابی سے ایک سرے سے دوسرے سرے تک پہنچ جاتا ہے۔ آپ کو معلوم ہی ہو گا کہ وہ ایسا کیسے کر لیتا ہے۔ جی ہاں! آپ کی سوچ بالکل صحیح ہے کہ یہ سارا کھیل توازن کا ہے؛ جہاں توازن بگڑا وہاں کھیل خراب ہو جائے گا۔ زندگی کی تنی ہوئی رسّی پر کامیابی سے چلنے کے لئے بھی دل و دماغ میں توازن برقرار رکھنا بے حد ضروری ہے۔ جب تک توازن قائم رہے گا تب تک زندگی میں راحت اور سکون رہے گا۔ جیسے ہی ذرا سی لغزش ہوئی، زندگی کی کشتی ہچکولے لینے لگتی ہے اور انسان جسمانی، جذباتی اور نفسیاتی مسائل میں الجھنا شروع ہو جاتا ہے۔ کچھ ایسا ہی معاملہ اس کیس کا ہے۔ ایک نہایت ہی پُر وقار، با رعب شخصیت کے مالک اور اعلیٰ عہدے پر فائز انجینئر صاحب اسلام آباد سے اپنا کیس ڈسکس کرنے عین وقت پر تشریف لائے۔ عمر ساٹھ [...]

28 06, 2019

فسچولا بھگندر کا علاج – ہومیوپیتھک دوائیں اور کامیاب کیس – حسین قیصرانی

By |2020-09-16T14:28:44+05:00June 28, 2019|Categories: Digestive System, Homeopathic Awareness, Homeopathy in Urdu, Infectious Diseases, SOLVED CASES|0 Comments

(کیس کی تحریر اور کمپوزنگ کے لئے محترمہ مہرالنساء کا خصوصی شکریہ!) اسلام آباد کے پُرفضا ماحول میں بچپن گزارنے والے اس نوجوان کو شروع سے ہی محنت اور اپنے زورِ بازو پر بھروسہ کرنے کی لگن تھی۔ اپنی دنیا خود تخلیق کرنے کے ولولہ اور عزم نے اُنہیں اپنے گھر بار تک کو چھوڑنے پر مجبور کر دیا۔ اعلیٰ تعلیم کے لئے یورپ اور امریکہ میں سالہا سال گزارنا بھی اِسی جذبہ کی تکمیل کے لئے تھا۔ عین نوجوانی میں، انہوں نے اپنے شب و روز انتہائی وضع داری، شرافت و نجابت سے گزارے۔ اصول پسندی اور روایات کی پاسداری تو سکول کے زمانہ سے مزاج کا حصہ تھی اور ترقی یافتہ ممالک میں رہائش نے اس کو مزید نکھار دیا۔ یہ سب کچھ بہت زبردست تھا تاہم اس کا ایک بہت بڑا نقصان یہ ہوا کہ گھر کے کھانے اور فیملی کے ساتھ وقت گزارنے کی نعمت میسر نہ رہ سکی۔ ہاسٹل لائف کا بھی اپنا ہی ایک مزا تھا۔ جہاں بھوک لگی، جو دل کیا کھا پی لیا۔ شب و روز بہت شاندار گزر رہے تھے۔ ایک دن انہیں احساس ہوا کہ میں ٹھیک نہیں ہوں۔ انہی کی زبانی سنئے۔ یہ کوئی 8 سال پہلے کی بات [...]

21 06, 2019

ایک بے قرار جسم و روح کی کہانی؛ اُس کی ماں کی زبانی

By |2020-11-27T14:11:20+05:00June 21, 2019|Categories: Autism ASD ADHD, Children's Diseases, Homeopathic Awareness, Homeopathy in Urdu, Mental Health, SOLVED CASES|0 Comments

میرا بیٹا شروع سے ہی بہت ایکٹو تھا ۔۔۔۔ ہر وقت کھیل کود کے لیے تیار ۔۔۔۔ ذہین ۔۔۔ اور شرارتی۔ وقت گزرنے کے ساتھ ساتھ اس کی چستی میں مزید اضافہ ہو رہا تھا اور میری توقعات میں بھی ۔۔۔۔۔ تھوڑا بڑا ہوا تو ایک اچھے سکول میں داخل کروایا لیکن سکول سے آ کر بھی اس میں تھکاوٹ کے ذرا سے آثار بھی نظر نہیں آتے تھے ۔۔۔۔ نیند کم ہوتی جا رہی تھی اور میرے خیالات بھی تبدیل ہو رہے تھے۔ جس کو مَیں چستی سمجھتی تھی وہ دراصل بے چینی تھی۔ مسلسل کھیلنا اور بے تکان کھیلتے چلے جانا اور اگر کوئی کھیلنے والا نہیں ہے تو سیڑھیاں چڑھتے اترتے رہنا۔ وہ باقی بچوں کی طرح ایک جگہ بیٹھ کے ٹی وی وغیرہ نہیں دیکھتا تھا۔ وقت کے ساتھ ساتھ اس کی بے چینی بڑھتی جا رہی تھی۔ سکول میٹنگ میں بتایا جاتا کہ پڑھائی کی طرف دھیان ہی نہیں ہے اور مجھے یہ بات پہلے ہی سے معلوم ہوتی۔ پڑھائی پر دھیان تو بہت دور کی بات تھی، وہ تو میری بات بھی دھیان سے نہیں سنتا تھا۔ جب کبھی اسے کسی پارک یا کھلی جگہ لے جاتی، وہ بے تحاشا بھاگتا تھا اور باقی [...]

12 05, 2019

ناپاکی، ٹچ کرنے، بار بار کپڑے بدلنے اور ہاتھ دھونے کا وہم، عجیب ڈر اور خوف – علاج اور ہومیوپیتھک دوائیں – حسین قیصرانی

By |2020-02-15T15:48:55+05:00May 12, 2019|Categories: Homeopathic Awareness, Homeopathy in Urdu, Mental Health, SOLVED CASES|0 Comments

ایک ماہ قبل کی بات ہے کہ ایک محترمہ نے سیالکوٹ سے فون کیا۔ وہ رو رہی تھیں۔ یاس و نا اُمیدی، غم اور پریشانی اُن کے ایک ایک لفظ سے جھلک رہی تھی۔ کہنے لگیں کہ میرا ایک ہی بیٹا ہے اور وہ عجیب و غریب بلکہ بہت ہی بے ہودہ باتیں کرتا ہے جن میں سے اکثر کسی کو بتائی بھی نہیں جا سکتی ہیں۔ یوں تو اُس کی صحت بچپن سے ہی ڈسٹرب رہی ہے-- کبھی جگر معدہ خراب تو کبھی لمبا اور لگاتار نزلہ زکام کھانسی بخار۔ خاندان میں سانس کی تکلیفیں، ٹی بی اور نفسیاتی جذباتی مسائل کی ہسٹری بھی ہے تاہم گزشتہ ایک سال سے معاملات ہماری برداشت سے باہر ہو چکے ہیں۔ ہر بڑے اور مشہور ڈاکٹر سے علاج کروایا ہے مگر بہتری نہیں ہو رہی بلکہ مسائل انتہائی خراب ہونے لگ گئے ہیں۔ ڈاکٹرز کی ہدایت یہ بھی تھی کہ بچے سے اُس کی فضول باتیں نہ سنی جائیں اور بس دوائی جاری رکھی جائے۔ تیرہ سالہ بیٹا ہر بات پر یہ کہتا کہ پلیز میری بات سُن لیں ورنہ مجھے کچھ ہو جائے گا۔ میرا دل بہت گھبرا رہا ہے۔ گھر میں سارا وقت اُس کی یہی التجا جاری رہتی۔ وہ [...]

9 04, 2019

چھوٹے قد میں اضافہ: ایک کامیاب کیس – ہومیوپیتھک دوائیں اور علاج – حسین قیصرانی

By |2020-10-15T22:51:48+05:00April 9, 2019|Categories: Homeopathic Awareness, Homeopathy in Urdu, Mental Health, SOLVED CASES|Tags: |0 Comments

کوئی پانچ ماہ اُدھر کی بات ہے کہ ایک اعلیٰ تعلیم یافتہ فیملی اپنے سترہ سالہ بیٹے کے ساتھ تشریف لائی۔ اُن کو میرے ایک محترم مہربان نے بھیجا تھا حالاں کہ وہ خود پاکستان میں صف اول کے، ٹاپ ہومیوپیتھک ڈاکٹر اور استادوں کے استاد ہیں۔ میرے دل میں ان کا بہت احترام ہے۔ ماں باپ کے بقول بچے کا مسئلہ صرف اور صرف ایک ہی تھا اور وہ یہ کہ اُس کا قد چھوٹا رہ گیا تھا اور اب کافی عرصہ سے بالکل ہی رکا ہوا تھا۔ انہوں نے اس حوالہ سے ہر طرح کے علاج کروائے اور ہومیوپیتھک شرطیہ اونچا قد لمبا کورس بھی جاری رکھے۔ اُن دوائیوں سے قد اور جسامت میں تو معمولی اضافہ تک نہیں ہوا لیکن بیٹے کی ٹینشن اور بے قراری پریشان کن حد تک بڑھ گئی۔ چھوٹے یا لمبے قد کا مسئلہ اب جسمانی سے زیادہ جذباتی اور نفسیاتی مسئلہ بن گیا ہے۔ معاملہ کوئی بھی درپیش ہو؛ تان اس پر ٹوٹتی ہے کہ تعلیم، تربیت اور ترقی کا کیا فائدہ کہ جب ہائیٹ چھوٹی رہ جائے۔ وہ اپنے دوستوں کے ساتھ چلتے بیٹھتے دل ہی دل میں صرف یہ چیک کرتا رہتا ہے کہ اُس کا قد کتنا چھوٹا ہے۔ [...]

30 03, 2019

بچوں میں شدید غصہ، چیزیں پھینکنا، نوچنا، اعتماد کی کمی، معمولی بات پر رونا اور چیخنا چلانا – کامیاب کیس، دوا اور علاج – حسین قیصرانی

By |2020-02-28T18:47:39+05:00March 30, 2019|Categories: Autism ASD ADHD, Children's Diseases, Homeopathic Awareness, Mental Health, SOLVED CASES|0 Comments

مارچ کے ابتدائی دنوں میں ایک فیملی اپنے ڈھائی سالہ بیٹے کے مسائل ڈسکس کرنے تشریف لائی۔ اُن کی نظر اور خیال میں بیٹے کی تکالیف یہ تھیں: 1۔ رات کے دوسرے پہر بچے کو بخار ہو جاتا تھا اور بچہ ٹانگوں / ہڈیوں کے درد کی شکایت بھی کرتا تھا۔ یہ بخار اور ٹانگوں کا درد بغیر کوئی دوائی دیے سورج نکلتے ہی بالکل ٹھیک بھی ہو جاتا تھا۔ 2۔ منہ میں متواتر چھالے اور السر (Ulcers) بن رہے تھے یعنی منہ پک جاتا تھا۔ 3۔ بچے کو سانس کی تکلیف تھی جس سے دودھ وغیرہ پینا مشکل ہو رہا تھا۔ شاید گلا (Throat) بھی خراب تھا۔ 4۔ ناک بند ہونے (Nose Blockage) کی شکایت تھی۔ 5۔ شدید غصہ، چیزیں اُٹھا اٹھا کر پھینکنے اور نوچنے کی عادت بہت ہی خطرناک صورت حال اختیار کر گئی تھی۔ مستقل بے چینی (Restlessness) اور بے قراری تھی ۔ 6۔ بال بہت زیادہ گر (Hair fall) رہے تھے۔ پلکوں تک کے بال بھی کمزور ہونے کے وجہ سے ختم ہوتے جا رہے تھے۔ 7۔ رات کو بہت زیادہ دانت پیستا (Teeth Grinding) ہے۔ دانت اتنا زیادہ اور زور لگا پر رگڑتا ہے کہ لگتا ہے کہ دانت ٹوٹ جائیں گے۔ اس کیفیت [...]

18 02, 2019

سانس کی تکلیفیں، مستقل نزلہ زکام کھانسی اور زندگی سے مایوسی – ہومیوپیتھک دوائیں، علاج اور کیس – حسین قیصرانی

By |2020-01-23T11:59:48+05:00February 18, 2019|Categories: Homeopathic Awareness, Homeopathy in Urdu, Respiratory, SOLVED CASES, Testimonials|0 Comments

کوئی ڈیڑھ ماہ پہلے کراچی سے ایک ڈاکٹر صاحبہ نے اپنے علاج کے لئے بذریعہ فون رابطہ فرمایا۔ یوں تو وہ بے شمار قسم کے مسائل کا شکار تھیں لیکن جو معاملات اُن کے لئے وبالِ جان تھے اُن کی فہرست کچھ یہ ہے: وہ اپنی صحت بلکہ یہ کہنا چاہئے کہ زندگی سے مایوس تھیں۔ ہر طرح کی دوائیاں بے دریغ استعمال کر چکی تھیں اور گذشتہ کچھ عرصہ سے ہومیوپیتھک پر مکمل انحصار تھا۔ انجیکشنز اور انٹی بائیوٹکس سے مایوس تھیں اگرچہ فیملی کا اِس پر بے حد اصرار جاری تھا۔ صحت کی خرابی کے باعث اپنا کلینک اور پریکٹس تقریباً ختم کر چکی تھیں۔ دن رات نزلہ زکام کی کیفیت، شدید بلغمی کھانسی، چھینکیں اور سانس بند ہونے کا شکار تھیں۔ سینہ ایسا بھاری جیسے بلغم سے بھرا پڑا ہو۔ ہر وقت ناک صاف کرنا زندگی کا اہم ترین کام رہ گیا تھا۔ دل کرتا تھا کہ کھل کر سانس میسر آ سکے۔ آواز بھی اب واضح نہیں رہی تھی۔ بلغم گہرے پیلے اور سبز رنگ کا تھا اور چپکنے والا بھی۔ اور اب یہ منہ میں آنے لگ گیا تھا۔ کھانسی اتنی شدت سے آتی کہ پیشاب کے قطرے اکثر نکل جاتے۔ ہونٹ خشک ہو چکے [...]

14 01, 2019

سانس میں شدید رکاوٹ، ہارٹ اٹیک کا وہم، سونے کے دوران موت کا ڈر، خوف اور فوبیا – کامیاب کیس، علاج اور ہومیوپیتھک دوائیں – حسین قیصرانی

By |2019-01-14T11:59:48+05:00January 14, 2019|Categories: Homeopathic Awareness, Homeopathy in Urdu, Mental Health, Respiratory, SOLVED CASES|0 Comments

یہ گذشتہ اگست کے پہلے ہفتہ کی بات ہے کہ جب مسز "ت" نے فون پر بتایا کہ وہ علاج کروانے کا حتمی فیصلہ کر چکی ہیں اور اپنا کیس ڈسکس کرنا چاہتی ہیں۔ اِس سے پہلے بھی دو تین مرتبہ انہوں نے رابطہ کیا اور یہی کہا تھا کہ وہ میری تحریریں باقاعدگی سے پڑھتی ہیں اور علاج کروانے میں سنجیدہ ہیں۔ اب کی بار انہوں نے اکاؤنٹ کی تفصیل معلوم کی اور کچھ دیر بعد رابطہ کرتے ہوئے بتایا کہ وہ فیس جمع کروا چکی ہیں۔ اپنا کیس آن لائن (Online Treatment) ڈسکس کرنے کی خواہش کا اظہار کیا کیونکہ وہ راولپنڈی سے تھیں۔ چار بچوں کی ماں، لمبا قد، وزن 70 کلوگرام اور عمر 38 سال۔ شوہر ایک ملٹی نیشنل کمپنی کے کنٹری ہیڈ ہونے کی وجہ سے اکثر سفر پر رہتے تھے۔ ہر دوسرے مہینے ہفتہ دس دن کے لئے ملک سے باہر جانا اُن کی روٹین تھی۔ بچوں، گھربار اور خوشی غمی کو نبھانے کی مکمل ذمہ داری محترمہ پر تھی۔ اِن کا بچپن نانی کے ہاں گزرا؛ اِس لئے بھائی بہنوں اور والدین سے کبھی حقیقی تعلق استوار نہ ہو سکے اگرچہ احترام اور ایک دوسرے کے خیال اور توجہ میں کسی طرف سے [...]