Blog2021-01-28T00:08:44+05:00

مثانے پیشاب کی بیماریاں، گائنی کے مسائل، شدید جسمانی و نفسیاتی درد، ہائپوتھائیرائڈ، انگزائٹی اور موت کا ڈر خوف فوبیا – کامیاب کیس، دوائیں اور علاج ۔ حسین قیصرانی

مینہ وریا  پر  پانی  گھٹ  اے اکھاں  وچ  طغیانی گھٹ اے تینوں بُھلاں تے  لگدا  اے ساہ  دی آنی جانی  گھٹ اے تیری صورت  چار  چفیرے میری نظر نمانی،  گھٹ اے اک دن مڈھوں مک جاوے گی اج کل تیری کہانی  گھٹ اے !  دو بچوں کی والدہ 35 سالہ مسز ایس فیس بک پر کیس پڑھنے کے بعد ملنے کے لیے تشریف لائیں۔ ان کے مسائل بے پناہ تھے۔ کئی مرتبہ سرجری ہو چکی تھی۔ کھانا پینا نہ ہونے کے برابر رہ گیا تھا۔ چلنا پھرنا تو تھا ہی دشوار۔ انفیکشنز کی ایک لمبی فہرست تھی جن میں کچھ کے متعلق تو مجھے بالکل بھی علم نہ تھا۔ صحت کے حوالے سے حالات کافی پیچیدہ تھے۔ معدہ، مثانہ، گلا، یوٹرس، ٹانسلز، بواسیر اور گائنی کے بے حد پیچیدہ مسائل تھے جن کا علاج وہ پاکستان کے ساتھ ساتھ امریکہ تک سے کروا چکی تھیں۔ صورت حال کو سمجھنے کے لیے طویل ڈسکشن درکار تھی۔ محترمہ کا کئی بار تفصیلی انٹرویو لیا گیا جس کا خلاصہ ذیل میں درج ہے۔ 1۔ مسز ایس کی کلائی میں درد رہتا تھا۔  جو رفتہ رفتہ تمام جوڑوں (joint  pains) تک پھیل گیا۔ سارا جسم درد کرتا تھا۔ ڈاکٹرز نے fibromyalgia  فائبرومائلجیاتشخیص کیا۔ درد اتنا شدید ہوتا تھا کہ بہت ہائی پوٹینسی کی پین کلرز اور سٹیرائڈز لینے پڑتے تھے۔ اتنی سخت دوائیاں لینے کے بعد فرق کوئی خاص نہیں پڑتا تھا۔ سارا جسم سوج جاتا تھا۔ خاص طور پر صبح کے وقت بدن تڑا مڑا سا محسوس ہوتا تھا۔ شدید اکڑاؤ کی کیفیت (body  [...]

آپ مریض کے مزاج اور تکلیفوں کا بڑا ذکر کرتے ہیں مگر بیماریوں کے ناموں کا نہیں۔ ایسا کیوں؟ ۔۔۔ ایک سوال اور اُس کا جواب ۔۔۔ حسین قیصرانی

 ہومیوپیتھی علاج کے اپنے تقاضے ہیں۔ اس میں صرف مرض، بیماری یا تکلیفوں کا علاج نہیں کیا جاتا بلکہ مریض کا علاج ہوتا ہے۔ کیس ٹیکنگ، مریض کے ہر پہلو کو مدِ نظر رکھ کر کی جاتی ہے۔ ہم مریض کی اُس صلاحیت (مدافعاتی نظام، امیون سسٹم، وِل پاور، وائٹل فورس) کو سمجھتے اور متوازن کرتے ہیں جو قدرت نے ہر انسان کے ساتھ اُس کے پیدائش کے ساتھ بھیجی ہے۔ ہومیوپیتھک دوائی بلکہ پوٹینسی کا کام مرض کو ٹھیک کرنا نہیں بلکہ امیون سسٹم یا وائٹل فورس کو پیغام دے کر متحرک کرنا ہے۔ اگر اُس سسٹم یعنی امیونیٹی کے اندر صلاحیت موجود ہے یا ہومیوپیتھک دوائی سے اُبھاری، بوسٹ یا متوازن کی جا سکتی ہے تو وہ طاقت یعنی قدرتی امیون سسٹم مریض کو ٹھیک کر دیتی ہے چاہے مرض کوئی بھی ہو یا بیماری کا نام کچھ بھی ہو یا اناٹومی فزیالوجی، میڈیکل سائنس، لیب رپورٹ کچھ بھی کہتی ہو۔ اِس لئے ایک ہومیوپیتھک ڈاکٹر کی زیادہ توجہ مریض کی اندرونی طاقت یعنی امیون سسٹم کو سمجھنے پر ہوتی ہے۔ مرض یا بیماریوں کے نام ایلوپیتھک سسٹم کا خاصا ہیں۔ ہومیوپیتھک سسٹم میں بھی مرض یا بیماریوں کو سمجھنے کی کوشش کرتے ہیں لیکن صرف بیماریوں کے ناموں پر ہومیوپیتھک علاج کرنا یعنی دوائی تجویز کرنا کوئی بڑا فائدہ نہیں دیا کرتا۔ جن محترمین کو ہومیوپیتھک سسٹم کا علم نہیں ہے وہ اپنی نا سمجھی اور کم علمی کی وجہ سے یہ سمجھتے کہتے ہیں کہ اس مرض کی سمجھ ہی نہیں ہے تو علاج کیسے کامیاب [...]

By |August 8, 2020|Categories: About|0 Comments

معدے کے شدید مسائل، انگزائٹی، ڈر خوف اور فوبیا – کامیاب علاج – اوکاڑہ سے آن لائن مریض کا فیڈبیک

السلام علیکم ڈاکٹر قیصرانی صاحب الحمد اللہ یہ عید پچھلی عید سے بلکل مختلف تھی۔ عیدالفطر پر ابھی آپ کا علاج شروع نہیں کیا تھا تو پہلے دن ہی کھانے کے بعد معدے میں گیس گھبراہٹ بے چینی شروع ہو گئی تھی اور میں بہت ڈسٹرب ہو گیا تھا۔ انگزائٹی (Anxiety)، ڈپریشن (Depression) اور ڈر خوف (Fear and Phobia) سے میں بہت مشکل میں آ گیا تھا۔ میں کھانے پینے میں بے پناہ احتیاطیں کر رہا تھا۔ اس بار تو ڈرتے ڈرتے تھوڑا بہت گوشت اور کلیجی بھی کھا لیا ہے کل۔ میں بہت خوش ہوں اللہ کا شکر ہے کہ کوئی مسئلہ نہیں ہوا۔ جب سے مجھے انگزائٹی اور فوبیا ہوا تو میں خود شاپ نہیں کھول پاتا تھا۔ ایک لڑکا رکھا ہوا ہے۔ کل وہ نہیں آیا تھا اور میں قربانی میں مصروف تھا۔ آج پھر اس کی چھٹی تھی تو میں نے کم از کم تین ماہ بعد آج خود شاپ کھول کر کسٹمرز کو ڈیل کررہا ہوں۔ الحمداللہ کوئی پریشانی انگزائٹی نہیں ہو رہی۔ آپ کے صرف دو ماہ کے علاج سے میرے 90% مسائل حل ہوچکے ہیں۔ لمبے عرصہ کے بعد اپنے دوست احباب سے ملنا ملانا بھی شروع ہے۔ خوشی غمی میں اب اکیلا جانے لگا ہوں۔ ورنہ مجھے اکیلے سے بہت ڈر پریشانی (Panic and Anxiety Disorder) ہوتی تھی۔ باقی جو چھوٹی موٹی تکالیف ہیں وہ میرے خیال میں بیماری کے دوران آنے والی جسمانی کمزوری کی وجہ سے ہیں۔ ہر گزرتے دن کے ساتھ ان میں بھی کمی آ رہی ہے۔ الحمدللہ۔ [...]

By |August 7, 2020|Categories: Testimonials|0 Comments

مثانے پیشاب کی بیماریاں، گائنی کے مسائل، شدید جسمانی و نفسیاتی درد، ہائپوتھائیرائڈ، انگزائٹی اور موت کا ڈر خوف فوبیا – کامیاب علاج – فیڈبیک

میں سمجھتی ہوں کہ میں چاہے جو مرضی الفاظ استعمال کر لوں شائد کبھی بھی نہیں بتا پاؤں گی کہ جو بے پناہ فائدہ مجھے ڈاکٹر حسین قیصرانی کے علاج سے ہوا۔ میں ایک بیمار ماں کے بطن سے پیدا ہوئی۔ بچپن سے ہی بہت ساری بیماریوں کا گھیراؤ رہا۔ کبھی کوئی اسپیشلسٹ، کبھی کوئی ڈاکٹر، پاکستان ہو یا امریکہ (USA)، ہر جگہ ڈاکٹروں پر جا جا کر تھک چکی تھی۔ Hypothyroid اور fibromyalgia جیسی لاعلاج بیماریوں سے تنگ آ گئی تھی۔ اب تو ڈاکٹر ٹی بی اور کینسر کی باتیں کرنے لگے تھے۔ پھر ایک دن فیس بک کے ذریعے ڈاکٹر حسین قیصرانی میرے لیے فرشتہ بن کر آئے۔ بچپن میں ایک عشق کر بیٹھی جس نے ساری عمر نہ جینے دیا نہ مرنے۔ اس کو کھو کر زندہ تو تھی مگر اندر سے مر چکی تھی۔ gallbladder اور ٹانسلز کی سرجریز ہوئیں۔ پچھلے سال اپنڈیکس کا آپریشن ہوا۔ لیکن ان سب کے باوجود بیماریوں میں اضافہ ہوا۔ بہت زیادہ anxiety تھی کہ میں مر جاؤں گی اور میرے بچے میری طرح رل جائیں گے۔ bladder کا ایسا مسئلہ میرے ساتھ لگ گیا کہ جس کی وجہ سے میں ایک رات میں 20 مرتبہ واش روم جاتی۔ ان سب نے مل کر میرا سونا جاگنا محال کر دیا۔ ڈاکٹر حسین قیصرانی سے 5 مہینے کے علاج کے بعد الحمدللہ Hypothyroid ختم ہو گیا۔ اب تو ٹیسٹ بھی نیگیٹو ہیں۔ fibromyalgia کا درد %80 بہتر ہے۔ ان کے ساتھ انگزائٹی (Anxiety) اور ڈپریشن (Depression) بھی ختم ہیں۔ جو مسائل ایلوپیتھک [...]

By |August 7, 2020|Categories: Testimonials|0 Comments

کیا آپ علاج کی کامیابی یا بیماری ٹھیک ہونے کی گارنٹی دے سکتے ہیں؟۔۔۔ ایک سوال اور اُس کا جواب ۔۔۔ حسین قیصرانی

میں صرف ایک معالج ہوں اور ہومیوپیتھی اصولوں کے مطابق علاج کرتا ہوں۔ ہر مرض یا مریض ٹھیک کرنا نہ ہومیوپیتھی سے ممکن ہے اور نہ ہی میرے جیسے محدود صلاحیتوں والے انسان کے بس کی بات ہو سکتی ہے۔ میرا مقصد گارنٹی کے فضول دعوے کر کے مریض جمع کرنا اور اُن سے پیسے بٹورنا نہیں۔ مشکل کیس پکڑ کر مریض کی بحالی صحت کے لئے دن رات محنت کرنا؛ میں نے اپنا شعار اور مشن بنایا ہے۔ اپنی اس محنت کا بھرپور معاوضہ لینا اپنا حق سمجھتا ہوں اور لیتا ہوں۔ عموماً صرف وہی کیس لیتا ہوں کہ جو کسی دوسرے طریقہ علاج یا ڈاکٹرز سے حل نہ ہو رہے ہوں۔ علاج شروع کرنے سے پہلے کم و بیش تین گھنٹے تک ایک کیس پر لگا دیتا ہوں۔ کبھی کبھار تو کئی کئی دن بھی لگ جاتے ہیں۔ یہی وجہ ہے کہ ایک دن میں پانچ سے زیادہ نئے مریض نہیں لیتا۔ اس قدر محنت کے باوجود کوئی دعویٰ نہیں کرتا۔ پروردگار برکت ڈال دے اور مریض تعاون کرے تو کمالات بھی ہو جاتے ہیں ورنہ مناسب حد تک فائدہ، بالعموم، ہو ہی جاتا ہے۔ کسی بھی علاج میں گارنٹی نہیں دی جاتی کیونکہ رزلٹ کا اختیار میرے پاس ہے ہی نہیں۔ مجھ سے تو کئی بار خود اپنا سر درد یا اپنے بیٹے بیٹی کا دانت یا پیٹ درد بھی ٹھیک نہیں ہوتا۔ اگر کوئی گارنٹی مانگے تو اُسے یہ جواب دے کر معذرت کر لی جاتی ہے کہ آپ غلط جگہ پر ہیں۔ میرا کام صرف [...]

By |August 7, 2020|Categories: About|0 Comments

ہومیوپیتھک علاج ناکام کیوں ہوتا ہے مگر آپ کا علاج کامیاب کیسے؟ ۔ ایک سوال اور اُس کا جواب ۔ حسین قیصرانی

ہومیوپیتھک علاج کی ناکامی کی کئی وجوہات ہو سکتی ہیں مگر ہومیوپیتھی میں میرے گرو ڈاکٹر جارج وتھالکس (George Vithoulkas) کی نظر میں یہ دو وجوہات بہت ہی اہم ہیں: ۔۔ ایک یہ کہ مریض اپنی پوری علامات نہیں دیتے یا نہیں دے پاتے۔ ۔۔ دوسرے یہ کہ ہومیوپیتھک ڈاکٹر اپنی جلد بازی، کم علمی یا نا تجربہ کاری کی وجہ سے مکمل علامات نہیں لے پاتا۔ ہومیوپیتھک کیس ٹیکنگ، تشخیص اور علاج بے پناہ محنت، مطالعہ اور تحقیق کا معاملہ ہے۔ جو لوگ ہومیوپیتھی کو صرف دوائی لینا سمجھتے ہیں؛ اُن کو واقعی کوئی فائدہ نہیں ہوتا اور وہ بے جا شکوہ کرتے رہتے ہیں کہ ٹاپ ہومیوپیتھک ڈاکٹر (Top Homeopathic Doctor) سے علاج بھی کروایا مگر کوئی فائدہ نہیں ہوا۔ اُن کو کون سمجھائے کہ چند علامات یا صرف بیماری کا نام بتا کر ہومیوپیتھک دوائی پوچھنا یا کھانا ہومیوپیتھک علاج ہے ہی نہیں تو اس کی کامیابی کی توقع کیسے کی جاتی ہے۔ رہا میرے علاج کی کامیابی کا معاملہ تو عرض ہے کہ اولاً یہ بات صحیح نہیں ہے کہ میرا علاج ہمیشہ کامیاب ہوتا ہے۔ یہ ٹھیک ہے کہ میرے اکثر مریضوں کی صحت واضح بہتر ہو جاتی ہے تاہم بہت ساروں کو فائدہ نہیں بھی ہوتا۔ میرا یا معالج کا کام اصولوں کے مطابق پورے خلوص، توجہ اور محنت سے علاج کرنا ہے اور بس۔ رزلٹ کا اختیار ہمارے پاس نہیں ہے۔ میں صرف اُن مریضوں کا کیس لیتا ہوں جو علاج کے تقاضے پورے کرنے میں پوری طرح سے سنجیدہ ہوں۔ اگر کوئی [...]

By |July 28, 2020|Categories: About|0 Comments

کیس ڈسکشن کیا ہے اور اس کے بغیر آپ تشخیص علاج کیوں نہیں کرتے؟ ایک سوال اور اُس کا جواب ۔ حسین قیصرانی

کیس ڈسکشن ایک پراسیس ہے جسے اختیار کئے بغیر ہومیوپیتھک علاج سے پورا فائدہ نہیں اُٹھایا جا سکتا۔ یہ کام صرف چند منٹ کی بات چیت یا فیس بُک یا ٹیکسٹ میسیجز میں سرانجام پانا ممکن ہی نہیں ہے۔ کیس ڈسکشن میں جہاں یہ بات اہم ہے کہ کوئی مریض ہومیوپیتھک ڈاکٹر کو اپنے کون کون سے یا کیا کیا مسائل بتاتا ہے؛ وہاں یہ نکتہ اس سے بھی زیادہ اہم کردار ادا کرتا ہے کہ وہ اپنے مسائل کس انداز، لہجے اور آواز سے یا کیسے بیان کرتا ہے۔ یہی وجہ ہے کہ جب تک مریض بات چیت کے ذریعے اپنے مسائل خود نہیں بتاتا یا بتاتی، اُسے ہومیوپیتھی ٹاپ دوا علاج (Top Homeopathic Medicine, best Doctor, Treatment) سے کوئی واضح فائدہ نہیں ہو سکتا۔ کیس ڈسکشن کے بعد ہی تشخیص ہو سکتی ہے۔ دوائی، پوٹینسی اور دوا کی خوراک کا فیصلہ مریض کے ساتھ کیس ڈسکس کرنے کے بعد کیا جاتا ہے۔ علاج کے دوران مریض کے بدلتے ہوئے حالات اور طبیعت کو مدنظر رکھتے ہوئے ضرورت کے مطابق دوائی، پوٹینسی اور خوراک میں تبدیلی کی جاتی ہے۔ کسی بھی مسئلے اور تکلیف کا سبب تلاش کرنے کے لئے یا مرض کی تہہ تک پہنچنے میں مریض سے براہِ راست انٹرویو کے لئے کم از کم تیس منٹ لگتے ہیں۔ بعض اوقات ایک گھنٹہ سے بھی زیادہ وقت لگ جاتا ہے۔ سبب یا وجہ معلوم ہو جائے تو علاج میں بڑی سہولت ہو جاتی ہے — ڈاکٹر اور مریض دونوں کے لئے۔ جو لوگ بغیر تفصیلی بات چیت [...]

By |July 24, 2020|Categories: About|0 Comments

آپ کے علاج کی فیس کتنی ہے اور اس میں کیا کچھ شامل ہے؟ ایک سوال اور اُس کا جواب ۔۔ حسین قیصرانی

  فیس کی تفصیل جاننے سے پہلے ہومیوپیتھک علاج کے تقاضوں کو سمجھنا بہت ضروری ہے۔ ہومیوپیتھک علاج کے اپنے تقاضے ہیں۔ اس میں علامات یا بیماریاں مختصر انداز میں نہیں؛ بلکہ بہت لمبی تفصیل سے ڈاکٹر کو سمجھنی ہوتی ہیں۔ علامات اور تفصیل جتنی کم ہوں گی علاج کی کامیابی کے اِمکانات بھی اُتنے ہی کم ہوتے ہیں۔ علامات کی تفصیل لینے کو کیس ڈسکشن یا کیس لینا کہتے ہیں۔ فون پر یا ملاقات میں تیس چالیس منٹ کا انٹرویو ہوتا ہے۔ اُس کے بعد گھنٹہ بھر کی ریسرچ۔ پھر جا کر تین ہزار 3000 سے زائد دوائیوں میں سے کوئی ایک دوا منتخب ہوتی ہے جو (ہمیشہ کی نہیں بلکہ) صرف موجودہ یعنی سب سے اوپر کی سطح کے مسائل کو ٹھیک یا حل کرتی ہے۔ دس پندرہ دن بعد پھر یہ کاروائی (یعنی انٹرویو، سوال جواب بذریعہ فون یا ملاقات) دوبارہ ہوتی ہے اور نئی صورت حال کے مطابق پھر کوئی دوائی منتخب ہوتی ہے۔ یہ سلسلہ چلتا رہتا ہے تاآنکہ مریض سمجھتا ہے کہ اُس کی صحت بحال ہو چکی ہے اور مسائل حل ہو گئے ہیں یعنی اُس کے پاس بتانے کو کچھ نہیں رہتا۔ فیس کے متعلق حتمی طور پر تو کیس ڈسکس کرنے کے بعد ہی کچھ کہا جا سکتا ہے۔ کیس لینے کے بعد ہی اندازہ لگ سکے گا کہ مریض کے علاج پر کتنی محنت، توجہ، توانائی اور دوائی لگے گی۔ ایک نارمل کیس کے علاج کی کم از کم ماہانہ فیس دس  ہزار روپے (Rs. 10,000/=  per     month) ہے۔ اس [...]

By |July 20, 2020|Categories: About|2 Comments

کیا وجہ ہے کہ آپ میسیج یا فیس بک پر کبھی بھی علاج نہیں بتاتے؟ ایک سوال اور اُس کا جواب ۔۔ حسین قیصرانی

علاج بتانے کی چیز ہے ہی نہیں تو کیسے بتائیں۔ علاج کروایا جاتا ہے۔ اگر علاج پوچھنے سے مراد کسی مرض کی دوائی پوچھنا ہے تو اس کا بھی کبھی کسی کو کوئی فائدہ نہیں ہوا کرتا۔ دوائی بتانے سے کوئی مرض یا مریض ٹھیک ہو سکتا ہوتا تو سارے ہسپتال اور کلینک ویران پڑے ہوتے۔ جس طرح ہر کام کا ایک طریقہ کار ہوتا ہے اسی طرح ہومیوپیتھک علاج بھی ایک مکمل پراسیس ہے جس میں مرحلہ وار کام کیا جاتا ہے۔ حالات کے مطابق ایک دوائی کے بعد دوسری اور پھر تیسری کی ضرورت بھی پڑتی ہے۔۔ اگر مسئلہ پرانا ہو تو اس کے علاج میں کئی مہینے لگ جاتے ہیں۔ اس دوران علامات کے مطابق کبھی دوائی تبدیل ہوتی ہے تو کبھی پوٹینسی اور کبھی خوراک ۔۔ اس پراسیس یعنی علاج کے آغاز میں تکلیف، مسئلہ اور مرض کے ساتھ ساتھ مریض کو بھی سمجھنا ہوتا ہے۔ مریض سے بے شمار سوالات جوابات ہوتے ہیں۔ یہ مرحلہ تیس چالیس منٹ اور بھرپور توجہ لیتا ہے۔ اس کے بعد کوئی گھنٹہ بھر ریسرچ کرنی ہوتی ہے۔ یہ وجہ ہے کہ میسیج یا فیس بک پر بیماری کا نام یا چند علامات بتا کر دوائی بتانا نا ممکن ہے۔ اس طرح جو دوائی بتائی جاتی ہے اُس سے فائدہ تو کچھ بھی نہیں ہوا کرتا؛ البتہ نقصانات یقینی ہوتے ہیں ۔۔۔۔ ویسے بھی یاد رکھنا چاہئے کہ مفت کے مشورے اکثر مہنگے ہی پڑا کرتے ہیں۔ کسی مریض کی صحیح دوائی، پوٹینسی اور خوراک کا فیصلہ کرنے کے لئے [...]

By |July 17, 2020|Categories: About|0 Comments

Successful Treatment of Low self esteem, Sexual weakness, Depression, Stress and Anxiety – Feedback

Alhamdulillah .. After a long time I am back to a healthy life and looking forward to much more. I was deeply disturbed psychologically. Specially communication always proved a hard pill to swallow. Sexual sphere was highly disturbed. If I sum up .... I was miserable.. But by the grace of Allah Kareem, Psychotherapy, Online Homeopathic treatment of Dr. Hussain Kaisrani I found myself with self esteem. My confidence level is more than 80% improved. Sexual weakness is 100% cured. I can communicate effectively. I managed fasting after 13 years. Suspicious attitude improved 80%. Stress management enhanced. My way of dealing with customers is better, concentration is good. Anxiety and Depression is not disturbing me anymore. Dr. Kaisrani always pays attention. He is very polite. He makes me feel confident and comfortable. He always encourages me.. because of him I am a confident person now. ============ Please Click HERE or visit the following link for complete Case in Urdu and medicines: اعتماد کی کمی، معدہ خرابی، جنسی کمزوری، انگزائٹی، ڈر خوف اور فوبیاز – کامیاب کیس، علاج اور دوائیں – حسین قیصرانی

By |July 11, 2020|Categories: Testimonials|0 Comments

Owais Liaqat Kalyar recommends Hussain Kaisrani Psychotherapist & Homeopathic Consultant Facebook Review

ALHAMDU LILLAH! For the last Ten Years my whole Family had been extremely satisfied with your treatment and consultation and for being an excellent listener as a doctor. Highly recommended person not only as a Doctor but as a wonderful human being MA SHA ALLAH. Keep the good work and healing going 👍 ---------- Hussain Kaisrani - Psychotherapist & Homeopathic Consultant - Lahore Pakistan Phone Number 03002000210

By |July 5, 2020|Categories: Treatment|0 Comments

فسچلا ، فسچلہ، فسٹولا، فسٹلا، بھگندر کا بغیر آپریشن کامیاب علاج ۔ فیڈبیک

الحمد للہ کہ میرا فسچولا بالکل ٹھیک ہو گیا ہے۔ میری بیٹی کے علاج کے سلسلے میں ہومیوپیتھک ڈاکٹر حسین قیصرانی سے میرا تعارف چار سال پہلے سے تھا۔ بیٹی چار ماہ کی تھی جب اسے سخت کھانسی ہو گئی۔ اس کے بعد اسے چیسٹ انفیکشن کا شدید مسئلہ رہنے لگا۔ اُسے اکثر اینٹی بائیوٹک ادویات دینی پڑتی تھیں۔ ٹاپ سپیشلسٹ ڈاکٹرز سے بھی علاج کروایا مگر سب کی دوائیں ملتی جُلتی تھیں یعنی انٹی بائیوٹیک۔ ایک دوست نے مجھے مشورہ دیا کہ ڈاکٹر حسین قیصرانی سے بیٹی کا علاج کرواؤں لیکن میرے والدین اور بہن بھائی ہومیوپیتھی علاج کو بہت فضول سمجھتے تھے۔ یہی میرے سسرال کی بھی سوچ تھی۔ مجبوراً ہم ہومیوپیتھی کی طرف آئے۔ اللہ نے کرم کیا اور بیٹی کو دو ہفتے کے اندر واضح بہتری آ گئی۔ اُس کے بعد شاید اب تک ایک بار کسی مجبوری میں انٹی بائیوٹیک دینی پڑی ہے۔ اب وہ ماشاء اللہ بالکل ٹھیک ہے۔ تقریباً دو سال پہلے میں نے ڈاکٹر حسین سے اپنے فسچولا (Anal Fistula) کے لئے رابطہ کیا۔ یہ بہت تکلیف دہ تھا اور ڈاکٹرز نے اس کا واحد حل سرجری بتایا تھا۔ جب میں نے ڈاکٹر قیصرانی سے فون پر ڈسکس کیا تو انھوں نے مجھے تسلی دی اور کہا کہ یہ کوئی بڑا مسئلہ نہیں ہے۔ اگر ہم اس کو ہر حوالہ سے سوچ سمجھ کر حل کریں تو یہ پانچ چھ ماہ کے علاج سے بغیر آپریشن سرجری بالکل ٹھیک ہو سکتا ہے۔ میرا آن لائن علاج شروع ہوا۔ انہوں نے میری بیماری [...]

By |July 3, 2020|Categories: Testimonials|0 Comments

فسچلا بھگندر، معدہ خرابی، میگرین سر درد ۔ کامیاب کیس، دوا اور علاج ۔ حسین قیصرانی

29 سالہ مسز K  دو سال قبل انہی دنوں میں علاج کے لیے تشریف لائیں۔ محترمہ بہت پریشان تھیں۔ پچھلے چھ ماہ سے ایک زخم تکلیف دے رہا تھا۔ مسئلہ زیادہ بڑھا تو معائنہ کروایا۔ ڈاکٹر نے فسچولا (Anal Fistula)  تشخیص کیا اور فوری سرجری کا مشورہ دیا۔ محترمہ گومگو کی کیفیت میں تھی۔ جسمانی تکلیفیں تو تھیں ہی، ساتھ ساتھ ذہنی، جذباتی اور نفسیاتی مسائل بھی تھے۔ علاج سے پہلے تفصیلی ڈسکشن ہوئی اور جو صورت حال سامنے آئی وہ درج ذیل ہے۔ 1۔ چھ ماہ پہلے مقعد کے قریب ایک دانہ بنا۔ شروع میں یہ زیادہ تکلیف نہیں دیتا تھا۔ پھر اس میں چبھن کا احساس ہونے لگا۔ کچھ عرصہ بعد اس دانے نے پیپ والی پھنسی کی شکل اختیار کر لی۔ یہ دانہ سوج جاتا اور بیٹھنے میں بہت تکلیف ہوتی۔ خاص طور پر مینسز کے دنوں میں سوجن بہت بڑھ جاتی اور جلن ناقابلِ برداشت ہو جاتی۔ گاڑی یا بائیک سے اترنے کے بعد پندرہ بیس منٹ تک کھڑے رہنا پڑتا کیوں کہ بیٹھنے سے درد ناقابلِ برداشت ہو جاتی۔ کچھ دوائیاں وغیرہ لیں مگر یہ مسئلہ بڑھتا جا رہا تھا۔ ہر وقت ہلکا ہلکا بخار رہتا۔ ڈاکٹرز نے بتایا کہ یہ بھگندر، فسٹولا یا فسچولا (fistula) ہے اور اس کا واحد علاج سرجری ہے۔ اس بات کی کوئی کنفرمیشن نہیں تھی کہ سرجری کے بعد دوبارہ تو نہیں ہو جائے گا۔ 2۔ منفی سوچیں(negative thinking)  بہت زیادہ تنگ کرتی تھیں۔ ذرا سی بات پر دماغ انتہائی خراب صورت حال کا تصور کر لیتا تھا۔ اگر بائیک [...]

By |July 2, 2020|Categories: SOLVED CASES|0 Comments

حسین قیصرانی سے آن لائن علاج ایک شاندار تجربہ ۔ فیس بیک ریویو ۔ ربیعہ فاطمہ، لاہور

میرا نام ربیعہ فاطمہ ہے اور میں لاہور کی رہائشی ہوں۔ مجھے اپنے اور اپنے بچوں کے لیے ڈاکٹر حسین قیصرانی سے کنسلٹ کرتے ہوئے تقریباً دو سال ہونے کو ہیں۔ اس دوران مجھے بہت سہولت رہی ہے کہ مجھے کسی میڈیکل ڈاکٹر کو کنسلٹ کرنے اور ایلوپیتھک دوا استعمال کرنے کی ضرورت پیش نہیں آئی۔ اللہ کا کرم ہوا اور ڈاکٹر صاحب بھی اتنا اچھا گائیڈ کرتے رہے ہیں کہ مجھے پہلے بچوں کی صحت کے حوالے سے جو ٹینشن رہتی تھی، اس کا مسئلہ حل ہو گیا۔ میرے بچوں کو بچپن سے ہی کبھی گلے کا انفکشن، کبھی چھاتی اور کبھی پیٹ کا انفکشن رہتا تھا اور کبھی سکن کے مسائل۔ لہذا اینٹی بائیوٹک ادویات کا استعمال تقریباً مسلسل ہی جاری رہتا تھا۔ ڈاکٹر قیصرانی سے رابطہ کے بعد انٹی بائیوٹیک وغیرہ سے مکمل جان چھوٹ چکی ہے۔ اب میں نے اپنے سب سے چھوٹے بچے کے لیے پیدائش کے ساتھ ہی صرف ڈاکٹر صاحب سے رابطہ رکھا ہے اور ہومیوپیتھی کے استعمال سے اس کے تمام مسائل حل ہو رہے ہیں اور ابھی تک اس کا کوئی مسئلہ مسلسل نہیں چل رہا۔ میرا یہ بچہ باقی سب بچوں کی نسبت زیادہ صحت مند اور ایکٹو بھی ہے۔ ما شاء اللہ چونکہ میں پریگنینسی سے پہلے ہی ڈاکٹر صاحب سے کنسلٹ کر رہی تھی تو پریگنینسی کے دوران بھی میں نے ہومیوپیتھی کو ہی ترجیح دی۔ اگر پچھلی پریگنینسی سے موازنہ کیا جاے تو اس دفعہ متلی قے کے روٹین کے مسائل کے علاوہ مجھے کئی طرح کی [...]

By |July 1, 2020|Categories: Testimonials|0 Comments

اعتماد کی کمی، معدہ خرابی، جنسی کمزوری، انگزائٹی، ڈر خوف اور فوبیاز – کامیاب کیس، علاج اور دوائیں – حسین قیصرانی

"میں یہ نہیں کر سکتا" ۔۔۔۔۔۔ "یہ مجھ سے نہیں ہو گا" ۔۔۔۔۔۔ "یہ بہت مشکل ہے" ۔۔۔۔۔۔ "اگر میں نہ کر سکا تو" ۔۔۔۔۔۔ "لوگ کیا کہیں گے" ۔۔۔۔۔۔ یہ وہ الفاظ ہیں جو کسی بھی انسان کی زندگی میں کامیابی کے زینے کو مکمل طور پر مقفل کر دیتے ہیں۔ یہ کہانی بھی ایک ایسی ہی شخصیت کی ہے۔ خوشاب کے رہائشی 39 سالہ مسٹر ش، ایک بیٹے کے والد، اپنا کاروبار کرتے ہیں۔ ان کا سب سے بڑا مسئلہ خود اعتمادی کا نہ ہونا اور معدہ کی شدید خرابی تھی۔ اور اس مسئلے نے ان کے نفسیاتی مسائل کو خاصا پیچیدہ بنا دیا تھا۔ ڈر خوف فوبیا، وسوسے، منفی سوچیں اور غیر مستقل مزاجی نے اُن کی زندگی عذاب بنا رکھی تھی۔ ازدواجی اور کاروباری معاملات بری طرح متاثر تھے۔ ساتھ ساتھ ہاضمہ کی مستقل خرابی اور پیٹ کے مسائل بھی نمایاں تھے۔ دواؤں کا ایک بیگ ہر وقت ساتھ رکھتے جس میں تمام ممکنہ مسائل کی دوائیں موجود ہوتیں۔ سوشل میڈیا اور گروپس میں کیسز پڑھنے کے بعد رابطہ کیا۔ طویل کیس ڈسکشن مندرجہ ذیل حقائق کو سامنے لائی۔ خود اعتمادی بالکل نہیں (lack of confidence) تھی۔ اپنی بات کہنے کی ہمت نہیں ہوتی تھی۔ گھر ہو یا چوپال، بزنس میٹنگ ہو کوئی نجی محفل، ہرجگہ اپنی کوئی سوچ تھی نہ اظہارِ خیال کا حوصلہ۔ دوران تعلیم کلاس میں سبق یاد بھی ہوتا تو سنا نہیں پاتے تھے۔ کالج یونیورسٹی میں پریزینٹیشن دینا یا بلیک بورڈ تک جانا بھی محال ہو جایا کرتا۔ اگر کہیں بات کرنا نا گزیر ہوتا تو پیٹ [...]

By |June 28, 2020|Categories: SOLVED CASES|0 Comments

Hussain Ahmad Highly Recommends for Online Treatment of Hussain Kaisrani – Facebook Review

I am 27 years old. It was 10 years ago when I had the first sign that something seriously wrong with my health. I started complaining anorexia. I turned into an introvert. I stopped any kind of interaction with my friends and family. All this made me sick enough that i started consulting well known doctors. And started taking medicines in high amount that were a risk to my life. But only what i obtained were the cons. I had been sick so long i couldn't remember what it felt like to be healthy. Finally Allah bestowed his blessing on me and i got a chance to meet Dr Hussain Kaisrani. A great person and well experienced psychologist, psychotherapist and homeopathic consultant. He is very compassionate, knowledgeable, empathetic and most respectful person. Wherever the art of medicine is loved there is also a love of humanity. He listened to me attentively and by his medicine and efforts i literally got cured and got a new life. I really want to thank him that he made me regain my life after a long time of desperation. I highly recommend those who are confronting any kind of mental disorders or other health issues to consult Doctor Hussain Kaisrani and throw away all the stress from their lives. Jazakillah again to Dr Hussain Kaisrani one of the best psychotherapists and homeopathic consultants in the world.. ---------------- Hussain Kaisrani - Psychotherapist & Homeopathic Consultant - Lahore Pakistan. Phone 03002000210

By |June 27, 2020|Categories: Testimonials|0 Comments

حسین قیصرانی سے آن لائن علاج ۔ ایک بہت بڑی سہولت ۔ گوگل ریویو

ہمارے ہاں آن لائن علاج بہت زیادہ عام نہیں ہے۔۔۔ عام آدمی ابھی بھی اس سے ناآشنا ہے لیکن اس کی افادیت سے انکار بھی ممکن نہیں۔ ایک سال قبل سوشل میڈیا پر ہومیوپیتھک کنسلٹنٹ ڈاکٹر حسین قیصرانی صاحب کے کیسز کا مطالعہ کرنے کے بعد، میں نے بھی ڈاکٹر صاحب سے آن لائن علاج کا فیصلہ کیا۔ بلا شبہ یہ ایک شاندار تجربہ رہا ۔۔۔ اس سے پہلے علاج کبھی اس قدر سہل نہ تھا۔ کیا ہم کبھی تصور کر سکتے ہیں کہ ہمیں کسی اسپیشلسٹ سے ٹائم نہیں لینا، بے ہنگم ٹریفک سے الجھ کر ہاسپٹل نہیں جانا، کلینک پر اپنی باری کا انتظار نہیں کرنا، پھر فارمیسی کے چکر نہیں لگانے، ڈھیروں اینٹی بائیوٹک نہیں کھانی، بلا ضرورت اللہ کی نعمتوں سے پرہیز نہیں کرنا۔۔ یقیناً یہ سب ناممکن لگتا ہے۔ مگر آج میں ایسی ہی زندگی گزار رہی ہوں۔۔ میں اور میری فیملی پچھلے ڈیڑھ سال سے ڈاکٹر صاحب سے منسلک ہیں۔۔ اور صحت کے حوالے سے ہم نے بہترین وقت گزارا ہے۔ یہ علاج ہر لحاظ سے سود مند رہا۔ چیدہ چیدہ خصائص میں سر فہرست رازداری، علاج میں دلچسپی، پیچیدہ مسائل کو تکنیکی انداز میں حل کرنا، ایمرجنسی معاملات کو ترجیحی بنیادوں پر دیکھنے کے لیے ہمہ وقت تیار رہنا اور بروقت دستیابی ہے۔ ایک ماہر معالج اور مریض کا ایسا تعلق جو ذہن و جسم کو شفایابی کی طرف لے کر جاتا ہے۔ میری والدہ طویل عرصے سے بلڈ پریشر اور جوڑوں کے درد میں مبتلا تھیں۔ انھیں اکثر ہاسپٹل لے جانا پڑتا [...]

By |June 22, 2020|Categories: Homeopathic Awareness, Homeopathy in Urdu, Testimonials|0 Comments

Piles بواسیر , Fissures, Hemorrhoids and OCD – Cured in 3 Months – Feedback

AlhamdoLillah! I have recovered from almost all of my symptoms related to severe chronic Piles, Fissures and Hemorrhoids after 4 months homeopathic treatment by Dr. Hussain Kaisrani. I had health anxiety and other emotional issues including OCD (Obsessive Compulsive Disorder), but I am back to normal, happy and healthy life now. Since 3 months I am living a medicine free life. When I am writing this feedback after 3 months of completing the Homeopathic treatment, I forgot the miseries and pains of those difficult days. It was by the grace of Allah SWT and of course due the dedicated treatment provided by Dr. Kaisrani. I'm blessed that I found Dr. Kaisrani who being a Psychotherapist and Psychologist understood the nuances of my medical conditions which I thought were really difficult to handle and equally worried to whom to share them (because of the nature of problems). I wish him all the blessings and ease in his life and would highly recommend him to anyone going through any kind of medical or psychological issues in his / her life. Hussain Kaisrani - Psychotherapist and Homeopathic Consultant - Lahore Pakistan. Phone 03002000210

By |June 21, 2020|Categories: Testimonials|0 Comments

Syeda Bushra Sajjad recommends Hussain Kaisrani – Psychotherapist & Homeopathic Consultant

Syeda Bushra Sajjad recommends best Doctor; Hussain Kaisrani - Psychotherapist & Homeopathic Consultant. 27 October 2019· I am his patient since long. I found him best in homeopathy, not only the physician, he is also very kind hearted and caring person. I was facing serious pain, sort of muscular pain since last five days. And from yesterday it was getting serious but after his emergency medication I am much better now. Strongly recommended.

کیا آپ اپنا اور اپنے خاندان کی روزمرہ تکلیفوں کا علاج خود کرنا چاہتے ہیں؟

کیا آپ اپنا اور اپنے خاندان کی روزمرہ تکلیفوں (Acute Health Issues) کا علاج خود کرنا چاہتے ہیں؟ اگر آپ کا جواب نہیں میں ہے تو اس تحریر کو پڑھ کر اپنا وقت مزید ضائع نہ کریں۔ اور اگر آپ کا جواب ہاں میں ہے تو ہومیوپیتھی نہایت ہی محفوظ، تیز ترین اور سادہ ترین طریقہ علاج ہے۔ دوائی، پوٹینسی اور خوراک سوچ سمجھ کر دی جائے تو اس کا کوئی سائیڈ ایفیکٹ بھی نہیں ہوتا۔ اگر آپ ہومیوپیتھک طریقہ علاج کو مفید سمجھتے ہیں اگر آپ کی تعلیم یا سمجھ بوجھ گریجویشن تک ہے اگر آپ سیکھنے کا جذبہ رکھتی یا رکھتے ہیں اگر آپ ہومیوپیتھک ڈاکٹر یا ایلوپیتھک ڈاکٹر یا صحت کے معاملات میں دلچسپی رکھتے ہیں اگر آپ اوسطاً پندرہ منٹ روزانہ نکال سکتے ہیں اگر آپ کو انٹرنیٹ، وٹس اپ، فیس بک اور یوٹیوب سے بنیادی تعارف ہے اگر آپ اپنے خاندان کی صحت کے بنیادی اور وقتی مسائل (Only Acute Issues) گھر بیٹھے حل کرنا چاہتے ہیں جیسا کہ نزلہ، زکام، بخار، کھانسی، ہاضمہ، پیٹ کی خرابی، آنکھ درد آنکھ بہنا، سر درد، حاملہ کے مسائل، لیکوریا پیریڈ کی تکالیف، وقتی غم درد دکھ، پیشاب کی جلن درد، قبض، بچوں کی تکالیف، دانت درد، کان درد، رونا، دودھ نہ پینا، پیٹ کے کیڑے بھوک پیاس، چھوٹے زخم، عام چوٹیں، غصہ اور اچانک ہونے والی کوئی بھی تکلیفیں مثلاً وقتی ڈپریشن اور پینک اٹیک وغیرہ وغیرہ ۔۔۔۔ تو ہماری ٹیم ایک بین الاقوامی سطح کا آن لائن شارٹ ہومیوپیتھک کریش کورس (An International Level Online Homeopathic [...]

By |May 26, 2020|Categories: Professional, Treatment|0 Comments

فوڈ الرجی، گندم ویٹ گلوٹن الرجی، دودھ الرجی، معدہ کے شدید مسائل ۔ کامیاب کیس دوائیں اور علاج ۔ حسین قیصرانی

(کمپوزنگ و کیس پریزینٹشن: محترمہ مہرالنسا) آج پھر اس کی آنکھ کچن سے آنے والی پراٹھوں کی مہک سے کھلی۔ اس کا سارا جسم دکھ رہا تھا۔ اس نے بستر چھوڑنے کی کوشش کی لیکن ناکام رہا۔ بڑی مشکل سے وہ ٹیک لگا کر بیٹھ سکا۔ تھوڑی دیر بعد وہ ناشتے میں ابلے ہوئے چاول حلق سے اتار رہا تھا۔ گلی میں کھلنے والی کھڑکی سے بچوں کے کرکٹ کھیلنے کی آوازیں آ رہی تھیں۔ کیا وہ دوبارہ کبھی اپنے پرانے دوستوں کے ساتھ کرکٹ کھیل پائے گا۔۔۔۔! وہ اپنے آپ سے پوچھ رہا تھا لیکن اس کے پاس اپنے کسی سوال کا جواب نہیں تھا۔ موسم خاصا خوشگوار ہونے کے باوجود وہ پسینے میں بھیگا ہوا تھا۔ اپنی حالت پر آنسو بہانے کے علاوہ اس کے بس میں تھا ہی کیا۔ وہ اپنی ہی ذات میں مقید ہو کر رہ گیا تھا۔ زندگی ایک بند گلی کے دہانے پر تھی جس کی دوسری جانب روشنی کی کوئی کرن نظر نہیں آ رہی تھی۔ چاروں جانب اندھیرا تھا صرف گھپ اندھیرا۔۔۔۔!۔ چوبیس سالہ نوجوان مسٹر RS کا تعلق اسلام آباد سے ہے۔ مارکیٹنگ کا بزنس کرتے تھے لیکن پچھلے دو سال سے کام کاج چھوڑ چکے تھے اور اپنے کمرے اور بستر تک محدود ہو کر رہ گئے تھے۔ ذہنی، جذباتی، نفسیاتی اور جسمانی حوالے سے اُن کے مسائل کافی گھمبیر تھے۔ دو سال سے مختلف ہسپتالوں اور ڈاکٹرز کے چکر کاٹ رہے تھے۔ وہ شدید قسم کی گندم، گلوٹن الرجی (Gluten, wheat allergy) کا شکار تھے۔ معدہ بہت زیادہ [...]

وِٹلائيگو یعنی برص: جب مہک نے اپنی اور برص کا شکار دیگر افراد کی نمائندگی خود کرنے کا فیصلہ کیا ۔ سحر بلوچ

ناک پر عینک ٹکائے اور دونوں ہاتھ منھ پر دھرے ایک عورت سامنے کھڑی لڑکی سے پوچھتے ہوئے نظر آتی ہے ’اے پھلبہری اے؟ ہیں؟ ہائے! پھلبہری ہو گئی اے۔ علاج نہیں کرایا؟‘ یکے بعد دیگرے اِسی ویڈیو میں کئی اور لوگ بھی آتے ہیں جو اسی قسم کے سوال پوچھنے کے ساتھ ساتھ یا تو کوئی ٹوٹکہ بتاتے ہیں یا کیمرے کی طرف گھورتے ہیں۔ اس ویڈیو میں موجود تمام کریکٹرز 27 سالہ مہک نے خود ادا کیے ہیں۔ اور اسی قسم کی مزید ویڈیوز ان کے انسٹاگرام پیج پر بھی موجود ہیں۔ بی بی سی سے بات کرتے ہوئے مہک نے بتایا کہ ’وِٹلائيگو (برص) کے مرض میں مبتلا افراد کے لیے اس قسم کے الفاظ سننا کوئی نئی بات نہیں ہے۔ ہر روز کچھ نہ کچھ سننے کو ملتا ہے۔‘ مہک اپنے انسٹاگرام پیج کے ذریعے برص کے بارے میں اپنے پانچ ہزار سے زائد فالوورز میں آگاہی پھیلا رہی ہیں اور اس حوالے سے انھوں نے مختلف سپورٹ گروپ بھی بنائے ہیں جہاں برص میں مبتلا افراد ایک دوسرے سے اپنے خیالات کے اظہار کے ساتھ ساتھ وہ واقعات بھی شیئر کرتے ہیں کہ کیسے انھیں مختلف مواقع پر ان کی منفرد جلد کی وجہ سے تنگ کیا گیا یا امتیازی سلوک کا نشانہ بنایا گیا۔ وِٹلائيگو (VITILIGO) یعنی برص کیا ہے؟ برص جلد کی خرابی یا اس میں پیدا ہونے والے ڈس آرڈر کے نتیجے میں ہوتا ہے جس میں انسان کی جِلد چھوٹے چھوٹے سفید دھبوں سے بھر جاتی ہے۔ ہر انسان میں اس [...]

By |May 19, 2020|Categories: Skin and Hair|0 Comments