Children’s Diseases

October 2016

Autism and ADHD Different Etiologies and Three Surprising Homeopathic Remedies (Jean Lacombe)

By |2016-10-04T09:49:55+05:00October 4, 2016|Categories: Autism ASD ADHD, Children's Diseases, Homeopathic Awareness, Mental Health, Professional|Tags: , , |

The diagnosis of hyperactivity or / and attention deficit and other behavioral disorders / autism is a real world epidemic.  A great number of parents are looking for natural alternatives to pharmaceutical drugs usually prescribed to “fix” these problems. My experience of the past many years has led me to three conclusions (observations) I would like to share. There are various etiologies able to explain these types of problems. Homeopaths know a great number of remedies addressing the different causes (such as a very stimulating diet, emotional problems, dyslexia, vaccination side effects, etc.) Once the causes are eliminated, the symptoms disappear. Some amazing homeopathic remedies appear to be a possible solution in most of the cases of hyperactivity and attention deficit: Tuberculinum, Medorrhinum, Carcinosinum. Many diagnoses in cases of children disguise the actual deficits and anomalies to be attributed to the educational system and “working conditions” itself. The Attention Deficit able to capture it all! A mother has come for consultation with her 11 year old boy diagnosed by his teacher as having an attention deficit disorder. The consultation reveals, however, a disturbing fact: this bright young man is the best student in his class! Maybe he is a little too [...]

Autism ASD / ADHD Cure Homeopathy

By |2016-10-04T15:58:33+05:00October 4, 2016|Categories: Autism ASD ADHD, Mental Health|

اکثر سوال کیا جاتا ہےکہ کیا ہومیوپیتھی میں آٹزم کا علاج ممکن ہے؟  ہومیوپیتھک طریقۂ علاج کا اپنا ایک ماڈل، فلاسفی اور نظام ہےجس میں مرض کا نہیں مریض کا علاج کیا جاتا ہے۔ بیماری کے نام کی اہمیت صرف اُس وقت تک ہے کہ جب ہم تحقیق، تشخیص اور سمجھنے کے مراحل میں ہوں۔ آٹزم کے مریضوں کے لئے ہومیوپیتک دوا کا اِنتخاب کے لئے ہومیوپیتھک ڈاکٹرکو کیس کی پوری تفصیلات لینا ہوتی ہیں۔ اِن تفصیلات میں اہم ترین نکات ہیں:۔ ۔۔۔ مرض کی وجہ کیا بنی؟ اس بنیاد اور وجہ تک پہنچنے کے لئے بعض اوقات گھنٹہ بھر کی نشست کی ضرورت پڑ جاتی ہے۔ کئی بار ایسا بھی ہوا ہے کہ دو تین نشستیں کرنا پڑیں۔  ۔۔۔ موجودہ علامات: عام طور پرمریض ایلوپیتھک ادویات کے زیرِ اثر رہنے کے بعد ہومیوپیتھک علاج کے لئے رابطہ کرتے ہیں اِس لئے موجودہ علامات ایلوپیتھک دوائیوں کے سائیڈ ایفیکٹ کی وجہ سے مریض کی اپنی نہیں بلکہ مصنوعی ہوتی ہیں۔ اِن موجودہ علامات میں مریض کے عجیب و غریب ڈر، فوبیاز، بےحد غصہ، چڑچڑا پن، نیند کی کمی، کھانے پینے میں محدود اشیا کی رغبت، کولا کے مشروبات، توڑپھوڑ کا مزاج، چیخ پکار، گھر کے دوسرے افراد کے ساتھ ہر وقت [...]

Homeopathic Treatment for Mild Autism

By |2016-10-04T18:13:47+05:00October 4, 2016|Categories: Children's Diseases, Mental Health|

I would like to know about treatment with homeopathy for mild autism. My son has been diagnosed with mild autism and a friend suggested that I find out about homeopathy treatment for autism. Does homeopathy have any curative treatment for mild autism?   Dear Mrs, Clinically mild autism relates to cases which do not have any mental retardation or significant hyperactivity associated with it. Cases of mild autism can show some delayed milestones, poor eye contact and social contact. However there comprehension and command-following is close to normal. Homeopathy does offer treatment for autism and homeopathy does give best results in cases of mild autism. The more significant is autism, the poorer is the prognosis. Homeopathy for autism is used in two common forms – classical homeopathy, which is the standard homeopathic treatment based on cause and symptom similarity, and CEASE therapy for autism, which is a form of homeopathic detoxification therapy developed specially for autism. Please consult a classical homeopath for treatment with homeopathy for mild autism. I wish speedy recovery to your son.

بچوں کے جذباتی، ذہنی اور نفسیاتی مسائل اور ہومیوپیتھک علاج

By |2018-10-29T07:41:16+05:00October 2, 2016|Categories: Autism ASD ADHD, Children's Diseases, Homeopathic Awareness, Homeopathy in Urdu, Mental Health|Tags: , , , , , , |

محترم ڈاکٹر بنارس خان اعوان نے دو کیس پیش کئے ہیں۔ ایسے کیس / بچے ہر دوسرے گھر میں موجود ہیں۔ والدین کو سمجھ نہیں آتی کہ ایک جیسی تربیت، ماحول اور خوراک کے باوجود اِن کے مزاجوں میں یہ بُعد المَشرقین کیوں اور کیسے؟ ہومیوپیتھی ایسے مسائل کا حل بڑی خوبی اور خوب صورتی سے کرتی ہے۔ باقاعدہ ہومیوپیتھک علاج سے ایسے بچوں کے مزاج میں توازن لایا جائے تو اِن کی شخصیت اور مستقبل کی زندگی کافی مسائل سے بچ جاتی ہے۔ اب آپ تفصیل ملاحظہ کیجئے! (حسین قیصرانی) میرے دو بیٹے ہیں۔ میں آپ کے سامنے دونوں کا ناک نقشہ پیش کرتا ہوں۔ آپ نے دونوں کی ڈرگ پکچر بتانی ہے۔ بڑا بیٹا: پڑھائی میں اگرچہ اچھا ہے لیکن تنقید ذرا برداشت نہیں کرتا۔ جب اس کی غلطیوں کی نشان دہی کی جائے تو چِڑ جاتا ہے۔ جھجک، غصے اور احساسِ کمتری کا مارا ہوا۔ باڈی اور جسامت کے حساب سے کمزور ہے، اور اس بات کو بہت محسوس کرتا ہے۔ اس نے جِم بھی جوائن کی ہوئی ہے اور جوڈو کراٹے بھی سیکھ رہا ہے۔ چھوٹے بہن بھائیوں کی پٹائی کا کوئی موقع ہاتھ سے نہیں جانے دیتا۔ ہمارے (والدین کے) ساتھ آئے دن اس کی اَن [...]

The Western Illusion – Autism and Autistic Children Problems

By |2016-10-04T08:51:55+05:00October 1, 2016|Categories: Autism ASD ADHD, Children's Diseases|Tags: , , |

I am a Pakistani and Canadian citizen. I can feel your pain as my 10 years old son was also diagnosed as having moderate Autism. He was diagnosed at age 2 in Canada (2004). At that time he was put on a long waiting list for ABA / IBI services. Even though we lived in a locality that had pilot projects and more than usual funding (Markham, Ontario), we were told by the service providers that based on the waiting list of people already diagnosed before him and their anticipation, he will likely not be able to start receiving the necessary ABA / IBI services at least till he is 4.5 or 5 years old. And the cut off age for provision of these services was (and I believe still is) 6 years. They tend to focus on younger kids (younger than 4 years, understandably), but due to long waiting list many kids grow older than 6 without receiving those necessary services / training. It was too expensive to afford those services privately (in the tune of 100s of dollars per hour), so when my son was 2.5 years old (early 2005), I decided to move my family out of [...]

September 2016

Homeopathy Treatment and Medicines for Bed Wetting / Enuresis / بچوں کا بستر پر پیشاب کر دینا

By |2016-09-29T10:12:45+05:00September 29, 2016|Categories: Children's Diseases|Tags: , , , |

Enuresis or Bed-wetting / Bed wetting  بچوں کا بستر پر پیشاب کر دینا refers to the involuntary passage of urine during sleep. Nocturnal enuresis of children may be simply a delay in the establishment of voluntary control over the act of micturition. Although bed wetting is quite normal in infants and children in the first one year, about 5% of 10 year olds and 13% of 6 year olds wet the bed. Most girls can stay dry by age of 6 and most boys stay dry by age 7 years. Any child having reached the age of eight years and not having gained full nocturnal control must be subjected to complete investigations. The child itself only is not responsible as generally considered by the parents since it is beyond his control and if the case is taken up properly and all aetiological factors are taken into consideration the child can be cured. Homeopathic treatment is very successful in curing bed wetting in the children. Types – There are 2 types of enuresis. Primary, in which the child has never been dry at night. Secondary, in which the child is dry for a period of months or years and then begins to wet the bed. Primary Enuresis / Bed-wetting: Primary enuresis has an [...]

ADHD Different Etiologies and Three Surprising Homeopathic Remedies

By |2016-09-21T06:57:26+05:00September 21, 2016|Categories: Children's Diseases, Diseases & Treatment, Professional|Tags: , , , , , , , |

The diagnosis of attention deficit and /or hyperactivity and other behavioral disorders is a real world epidemic.  A great number of parents are looking for natural alternatives to pharmaceutical drugs usually prescribed to “fix” these problems. My experience of the past 30 years has led me to three conclusions (observations) I would like to share. There are various etiologies able to explain these types of problems. Homeopaths know a great number of remedies addressing the different causes (such as a very stimulating diet, emotional problems, dyslexia, vaccination side effects, etc.) Once the causes are eliminated, the symptoms disappear. Some amazing homeopathic remedies appear to be a possible solution in most of the cases of attention deficit and hyperactivity: Carcinosinum, Medorrhinum, Tuberculinum. Many diagnoses in cases of children disguise the actual deficits and anomalies to be attributed to “working conditions” and the educational system itself. The Attention Deficit able to capture it all! A mother has come for consultation with her 11 year old boy diagnosed by his teacher as having an attention deficit disorder. The consultation reveals, however, a disturbing fact: this bright young man is the best student in his class! Maybe he is a little too enthusiastic and [...]

ذہنی، جذباتی اور نفسیاتی اُلجھنوں کا ہومیوپیتھک علاج — حسین قیصرانی

By |2018-12-28T16:59:01+05:00September 1, 2016|Categories: Children's Diseases, Homeopathic Awareness, Homeopathy in Urdu, Mental Health|Tags: , , |

حادثے، چوری ڈکیتی، فراڈ، اَغواء، ظلم و تشدد، بم دھماکے، قتل و غارت، بیماریاں، اچانک اَموات، عُریانی، بے حیائی، شہوت پرستی اور اِس طرح کے دیگر واقعات ہم ہر روز اخبارات، ٹی وی، انٹرنیٹ اور فیس بک وغیرہ پر پڑھتے دیکھتےہیں۔ ان حالات و واقعات کے ماحول میں رہنے والوں کے ذہنوں میں خوف، لالچ، طیش، غصہ، مایوسی، رنج و غم، شہوت اور اِنتقام جیسے جذبات کا غلبہ رہتا ہے تو یہ ایک فطری امر ہے۔ اس لئے پاکستانی معاشرے میں دورانِ علاج ذہنی علامات کو اتنی اہمیت نہیں دی جا سکتی جتنی ترقی یافتہ معاشروں میں۔ مثلاً برطانیہ اور یورپ میں علاج معالجہ کے حوالہ سے مشاہدہ کرنے کا موقع ملا تو اندازہ ہوا کہ وہاں کے ہومیوپیتھک ڈاکٹرز اپنی زیادہ توجہ ذہنی اور نفسیاتی مسائل و علامات پر دیتے ہیں۔ یہی وجہ ہے چوٹی کے تمام ہومیوپیتھک ڈاکٹرز کی کتب اور ریسرچ میں ذہنی علامات کو بڑی وضاحت و صراحت سے بیان کیا گیا ہے۔ اُن معاشروں میں پلے بڑھے لوگ نظام کے اندر رہنے کے اِس قدر عادی ہوتے ہیں کہ عملی زندگی میں تھوڑی سی بد نظمی اور خاندانی مسائل کی دگرگونی اُنہیں ہِلا کر رکھ دیتی ہے۔ اُن کے ذہنی، نفسیاتی اور معاشرتی مسائل گھمبیر، [...]

August 2016

پیٹ کے کیڑے یا چمونے، کاغذ، ٹشو اور مٹی وغیرہ کھانا – ہومیوپیتھک دوائیں اور علاج – حسین قیصرانی۔

By |2020-09-21T14:58:48+05:00August 27, 2016|Categories: Autism ASD ADHD, Children's Diseases, Gastrointestinal, Homeopathic Awareness, Homeopathy in Urdu, Mental Health|Tags: , |

پیٹ کے کیڑے (چمونے) ایک عام علامت اور بیماری ہے جو کہ خاص طور پر بچوں میں پائی جاتی ہے تاہم بعض اوقات بڑے بھی اِن کا شکار ہوجاتے ہیں۔ اِن کیڑوں کی کئی اقسام ہیں: چمونے، چھوٹے سفید کیڑے، چھوٹے سفید مگر کالے منہ والے کیڑے، تھوڑے سے لمبے کیڑے، زیادہ لمبے (ملہپ) کیڑے اور کدو کیڑا وغیرہ۔ Thread Worn, Tap Worm, Round Worm, Pin worm, Hook Worm عام طور پر سمجھا یہ جاتا ہے کہ مٹی وغیرہ یا میٹھا کھانے سے پیٹ میں کیڑے ہو جاتے ہیں تاہم برطانیہ اور یورپ کے بعض ہومیوپیتھک ڈاکٹرز اِس سے بالکل مختلف بلکہ متضاد رائے رکھتے ہیں۔ دورانِ تعلیم اِسی موضوع ۔۔ پیٹ کے کیڑے اور اُن کا ہومیوپیتھک علاج ۔۔ پر لندن میں ایک سیمینار میں شرکت کا موقع ملا جس میں یورپ، امریکہ اور برطانیہ کے ہومیوپیتھک ماہرین اور سکالرز نے میٹھا کھانے اور پیٹ کے کیڑوں کے باہمی تعلق پر اپنی تحقیقات پیش کیں۔ اُن میں سے اکثر ماہرین کا رجحان اِس طرف تھا کہ پیٹ کے کیڑوں کی اکثریت میٹھا کھانے سے بڑھتی نہیں بلکہ مرتی ہے۔ مریض جب میٹھا کھاتے ہیں تو ایسے کیڑے اپنی جان بچانے کے لئے اِدھر اُدھر نکلنے کی کوشش کرتے ہیں۔ [...]

بچوں کا بچپنا اور شرارتیں صحت کی علامت ہیں یا بیماری کی؟

By |2018-09-13T14:52:48+05:00August 16, 2016|Categories: Autism ASD ADHD, Children's Diseases, Homeopathic Awareness, Homeopathy in Urdu|Tags: , |

ڈاکٹر بنارس خان اعوان ہومیوپیتھی تدریس و تحریر میں اپنا ممتاز اور منفرد مقام رکھتے ہیں۔ وسیع المطالعہ ہونے اور سلیس اسلوب نگارش کے طفیل وہ نہایت گہری بات جتنی سادگی سے کرنے کا ملکہ رکھتے ہیں وہ صلاحیت پاکستان کی حد تک شاید ہی کسی اور ہومیوپیتھک ڈاکٹر میں ہو۔ بچوں کے مزاج اور علاج کے حوالہ سے ان کا بیان فرمودہ "جوناتھن شور" کا ایک کیس بڑی ہی اہمیت کا حامل ہے۔ میں نے اپنے کلینیکل تجربات میں بھی اِس امر کا مشاہدہ کئی بار کیا ہے۔ جوناتھن شور امریکن ہومیوپیتھ ہے اور گزشتہ چالیس سال سے یورپ امریکہ میں سیمینار کراتا ہے۔ اس کی کتاب Art of prescription بہت کام کی ہے۔ اپریل1989 کے سیمینار میں Suppression کے حوالے سے جوناتھن شور نے ایک بچے کے کیس کا ذکر کیا ہے۔ لکھتے ہیں: میرے کلینک میں ایک بچے کو اس کی ماں لے کر آئی۔ بچے کو کان کی تکلیف تھی۔ میں نے دیکھا بڑا شریف بچہ ہے۔ جب تک میرے کلینک میں رہا اِردگرد کے ماحول سے بے خبر خاموشی سے اپنے کھلونوں سے کھیلتا رہا۔ ذرا شرارت نہیں کی، چپ چاپ بیٹھا رہا اور کسی شے سے چھیڑ خانی نہیں کی۔ میں نے علامات کے [...]

Load More Posts