Children’s Diseases

August 2018

دبلی پتلی اور کمزور جسم نوجوان بچی کا ہومیوپیتھک علاج – حسین قیصرانی

By |2019-01-11T09:56:46+05:00August 5, 2018|Categories: Children's Diseases, Mental Health, SOLVED CASES|

آج ایک بچی کا کیس ڈسکس کرتے ہیں جس کی عمر تیرہ سال ہے اور وہ کئی قسم کے ذہنی، جسمانی، جذباتی اور نفسیاتی مسائل کا شکار ہے۔ اُس کے والدین کراچی کے تھے تاہم گذشتہ بیس سال سے لندن میں ہیں۔ بیٹی وہیں پیدا ہوئی، پلی بڑھی ہے۔ برطانیہ میں ایسے بچوں کو برٹش بارن (British Born) کہا جاتا ہے۔ یہ بچی بہت ذہین ہے اور محنتی بھی۔ اُس کا قد ابھی سے ہی اپنے ماں باپ سے بڑا ہے تاہم وہ بہت زیادہ دبلی پتلی اور سمارٹ ہے۔ اُس کی ماں کے بقول ایسے جیسے کہ ہڈیوں کا ڈھانچہ ہو۔ کھایا پیا اُس کے جسم کو لگتا ہی نہیں۔ ہر وقت ڈسٹرب، بے چین اور غصہ سے بھری رہتی ہے۔ ذرا سی بات کسی نے کہہ دی تو منہ بسور کر رونا دھونا شروع کر دیتی ہے۔ بات مزاج کے ذرا سا خلاف ہو تو آنکھوں سے آنسو رواں ہو جاتے ہیں۔ کسی کام یا چیز سے سکون نہیں ملتا؛ تھوڑی دیر بعد ہر چیز سے اُکتا جاتی ہے۔ ماں کے بقول اِس کا نام ہی اُکتائی ہونا چاہئے۔ میں نے اِس حوالہ سے منیر نیازی کا شعر سنایا۔ عادت ہی بنا لی ہے تم نے تو منیر [...]

July 2018

سلیشیا بچوں کے جسمانی، جذباتی، ذہنی اور نفسیاتی مسائل – ہومیوپیتھک علاج – حسین قیصرانی

By |2019-03-25T18:43:49+05:00July 28, 2018|Categories: Children's Diseases, Homeopathic Awareness, Homeopathy in Urdu, Materia Medica, Mental Health|

والدین اپنے بچے کو علاج کے لئے لاتے ہیں تو بتاتے ہیں کہ ہمارا بچہ بہت ڈھیٹ اور ضدی ہے۔ تفصیلی کیس لینے پر جو معلومات ملتی ہیں؛ اُن کا خلاصہ مندرجہ ذیل ہے۔ بچے کو بلایا جانا پسند نہیں ہوتا۔ ایسے بچوں کی کیفیت کچھ یوں ہوتی ہے کہ وہ کچھ مانگ رہے ہوتے ہیں؛ مثلاً فرض کریں کہ حسن کہتا ہے کہ امی مجھے آئس کریم دے دیں۔ امی مصروف یا دوسرے کمرے میں ہونے کی وجہ سے جواب نہیں دے رہیں۔ اِس دوران بہن پوچھتی ہے کہ کیا مانگ رہے ہو؟ اب معاملہ بہت گڑ بڑ ہو جائے گا۔ حسن آئس کریم مانگ رہا تھا ماں سے اور بہن نے اس معاملہ میں مداخلت کر دی حالانکہ وہ اِس کی مدد کرنا چاہتی ہے۔ حسن صاحب خوب چیخیں گے اور روئیں گے کہ تم سے تو نہیں کہا تھا۔ ویسے یہ بچے بہت نفیس ہوتے ہیں اور ذمہ دار بھی۔ سکول اور پڑھائی میں بہت ہی اچھے سمجھے جاتے ہیں۔ اپنے معاملے کی صحیح وضاحت نہیں کر پاتے۔ ایک بات طے ہے کہ وہ یہ بالکل بھی پسند نہیں کرتے کہ اُن پر توجہ دی جائے یا اُن کے کاموں میں مداخلت کی جائے۔ جب پریشان ہوتے [...]

May 2018

گندم گلوٹین الرجی – سیلیک ڈیزیز- ہومیوپیتھک علاج – فیڈبیک

By |2019-04-25T14:45:27+05:00May 11, 2018|Categories: Autoimmune Disorders, Children's Diseases, Homeopathic Awareness, Homeopathy in Urdu, Testimonials|

گندم الرجی (Celiac disease / gluten-sensitive enteropathy / autoimmune disorder) کیا ہے؛ اِس سے متاثرہ بچوں اور اُن کے والدین کی زندگی کس طرح کے مسائل سے دوچار ہوتی ہے؛ اُس کا اندازہ عام لوگ لگا ہی نہیں سکتے۔ سرِدست والدین کا فیڈبیک ملاحظہ فرمائیں جن کی بیٹی کو گندم سے الرجی ہے۔ انہوں نے مختلف ہسپتالوں اور ڈاکٹرز سے سالہا سال علاج کروایا مگر آخر کار نتیجہ یہ نکلا کہ بچی کو گندم کی الرجی ہے۔ نوبت یہ ہو گئی تھی کہ اگر کسی ایسے برتن میں آٹا گوندھا گیا کہ جس میں پہلے گندم کا آٹا صرف رکھا گیا تھا تو بھی بچی کی صحت بہت خراب ہو جایا کرتی تھی۔ اُس کے برتن ہر لحاظ سے الگ تھلگ کر لئے گئے۔ عرصہ تین سال سے یہ احتیاط جاری تھی۔ والدین نے کافی جرات کی اور بیٹی کے علاج کے لئے رابطہ کیا۔ ہومیوپیتھک علاج کے دو ہفتے کے اندر گندم اور جَو بیٹی کے کھانے میں شامل کی جانے لگی۔ کل رات سے خالص گندم کی روٹی کھلائی گئی۔ الحمد للہ! بچی کو ذرا سا بھی کوئی مسئلہ نہیں ہوا۔ بچی کو نارمل انداز میں گندم سمیت ہر طرح کی خوراک مستقل جاری ہو گئی ہے۔ اللہ [...]

April 2018

بچوں کا بستر پر پیشاب کرنا – سبب اور ہومیوپیتھک علاج – حسین قیصرانی

By |2020-09-11T00:27:49+05:00April 19, 2018|Categories: Children's Diseases, Homeopathic Awareness, Homeopathy in Urdu, Mental Health, Testimonials|

کوئی تین ہفتے قبل مَیں نے ایک تحریر میں لکھا تھا کہ بچے اگر پانچ سال کی عمر تک بستر گیلا (سوتے یا نیند میں پیشاب) کر دیتے ہیں تو اُنہیں تربیت (ٹریننگ) کی ضرورت ہے اور اُس کے بعد ایسا کریں تو اُنہیں علاج کی۔ ایسے بچوں کو ڈانٹنا، شرمندہ کرنا یا مہمانوں، رشتہ داروں کے سامنے ان کی اس تکلیف کا ذکر کرنا اُن کی آنے والی زندگی میں بہت پیچیدگیاں لاتا ہے۔ ایسا کرنے سے بچوں کی خود اعتمادی کو جو نقصان پہنچتا ہے؛ وہ عمر بھر اُن کی خوشگوار اور کامیاب زندگی میں رکاوٹ کا باعث بنتا ہے۔اِس حوالہ سے کئی خواتین و حضرات نے اپنے یا اپنے بچوں کے تجربات ڈسکس کئے۔ ہر کیس میں ایک بات واضح اور مشترک نظر آئی کہ اِس تکلیف سے گزرنے والے تمام لوگوں میں (چاہے وہ بچے ہوں یا بڑے) اعتماد کی واضح کمی پائی گئی۔ ایسا کیوں ہوتا ہے؟ کیا بچوں میں اعتماد (Confidence) کی کمی ہوتی ہے؛ اس لئے بچے بستر پر پیشاب کر دیتے ہیں یا بستر گیلا کر دینے کی وجہ سے اُن میں اعتماد (Confidence) نہیں رہتا۔ یورپ اور امریکہ میں اِس موضوع پر بہت تحقیق ہو چکی ہے اور ریسرچ کا یہ [...]

No More Bed Wetting after Homeopathic Treatment – Feedback

By |2018-04-19T13:43:44+05:00April 19, 2018|Categories: Children's Diseases, Testimonials|

Salaam, One good news worth sharing with you. For ....... there had been no instance of bed wetting. In fact, he gets up around 1 AM to go to the toilet, returns and sleeps again. So he has started to feel on his sleep about bladder pressure which wakes him up now. Last 4 weeks have been clean. Especially the last two weeks when he was attending school. Alhamdolillah. Thank you Dr sb for your guidance

چھوٹے قد، جسامت اور وزن میں اضافہ: ہومیوپیتھک دوا اور علاج – حسین قیصرانی

By |2019-01-16T15:26:46+05:00April 16, 2018|Categories: Children's Diseases, Homeopathic Awareness, Homeopathy in Urdu, Mental Health, Testimonials|

ایک ہفتہ قبل کراچی کی کاروباری فیملی نے اپنی بچی کے علاج کے لئے رابطہ کیا۔ اُن کے خیال میں بچی کی جسامت، وزن اور قد اپنی عمر اور کلاس کے بچوں سے واضح کم اور چھوٹا تھا۔ وہ کافی علاج کروا چکے تھے لیکن اب ہومیوپیتھک دوا استعمال کروانے کے خواہش مند تھے۔ اُن کو سمجھایا گیا کہ بچی کے مجموعی مسائل کو سمجھے بغیر جو بھی علاج ہو گا؛ اولاً تو وہ کوئی فائدہ دے گا ہی نہیں اور اگر کوئی نسخہ، ٹوٹکا اور تُکا کامیاب ہو بھی گیا تو وہ محض وقتی ہو گا۔ ہومیوپیتھک علاج کا یہ ضروری تقاضا ہے کہ ہم بچی کے ہر مسئلے کو ڈسکس کریں، سمجھیں کہ رکاوٹ کہاں ہے اور اُسے دور کیسے کیا جائے۔ بات اُن کی سمجھ میں آ گئی۔ بچی سے بات ہوئی۔ اُس کی پسند نا پسند کا بھی پوچھا گیا۔ والدہ سے کوئی گھنٹہ بھر ڈسکشن ہوئی اور والد صاحب کا انٹرویو ہوا۔ خلاصہ یہ تھا کہ بچی کو مختلف مواقع پر بہت دوائیاں دی گئیں۔ اُس کی خوراک اب بڑی ہی محدود ہے اور پیاس تو نہ ہونے کے برابر۔ کوئی صحت مند چیز کھانے کو راضی نہیں۔ پیزا، شوارما، نمکو پسند ہیں مگر وہ [...]

آٹزم ۔۔۔ بچوں کی صلاحیتیں متاثر کرنے والی تکلیف ۔۔۔ سعدیہ عاطف لاہور

By |2018-04-06T22:46:33+05:00April 2, 2018|Categories: Autism ASD ADHD|

سعدیہ عاطف صاحبہ ماہرِ نفسیات اور آٹزم کی تکلیف میں مبتلا -- آٹسٹک -- بچوں کی تربیت اور تحقیق میں مصروف ہیں۔ ہمارے اچھے باہمی مراسم ہیں اور اُن سے آٹزم کے حوالہ سے چند نشستیں بھی ہو چکی ہیں۔ اُن کی یہ تحریر (اگرچہ ہومیوپیتھک طریقہ علاج کے حوالہ سے نہیں ہے تاہم) اِس موضوع پر معلومات فراہم کرنے کا ذریعہ ہے۔ "صحافی" کے شکریہ کے ساتھ شئیر کی جاتی ہے۔ آئٹزم (Autism) خود میں مگن رہنے کی کیفیت کا نام ہے، یہ دنیا کے ہر خطے، رنگ ونسل اور طبقے میں بلا امتیاز پایا جانے والا مرض ہے، اس کی علامتیں پیدائش کے ابتدائی تین سال کے دوران کسی بھی وقت ظاہر ہوسکتی ہیں، کچھ بچے ابتدائی دو سال کے دوران بولنے اور سیکھنے کے عمل سے گزرتے ہیں پھر اچانک تین سال کی عمر تک پہنچنے تک ان صلاحیتوں کو اچانک کھو دیتے ہیں۔ آئٹزم دماغی نشوونما کی بے ترتیب حالت کو کہتے ہیں، یہ کیوں لاحق ہوتا ہے اس کی ابھی تک کوئی خاص وجہ پتہ نہیں چل سکی، تاہم مختلف ماہرین نے آئٹزم کی بہت سی وجوہات بیان کی گئی ہیں۔ کچھ لوگوں کا خیال ہے کہ یہ دوران حمل کسی بھی قسم کی منشیات [...]

March 2018

رعشہ – ہومیوپیتھک علاج – حسین قیصرانی ،Huntington’s Chorea, Chorea

By |2018-03-23T16:02:15+05:00March 23, 2018|Categories: Autism ASD ADHD, Children's Diseases, Homeopathic Awareness, Homeopathy in Urdu|

کانپنا، عجیب و غریب جسمانی حرکت، بے ڈھب چال، ہاتھ، پاؤں اور چہرہ کے عضلات کا بغیر ارادہ پھڑکنے، بعض اوقات ناچنے کی سی جسمانی حرکت کو رعشہ یا کوریا (CHOREA) کا مرض سمجھا جاتا ہے۔ یہ علامات بچوں میں، پانچ چھ سال کی عمر کے بعد نمودار ہونا شروع ہوتی ہیں۔ ابتداء میں ایک بازو یا ایک ٹانگ اور بعض اوقات دونوں متاثر ہوتی ہیں۔ بچے کی حرکت میں ایک جھٹکا سا محسوس ہوتا ہے جو دیکھنے والوں کو بھی نظر آ جاتا ہے۔ اُٹھنے، بیٹھنے میں، کوئی چیز اٹھانے اور رکھنے میں، روٹی کا نوالہ توڑنے، اٹھانے اور کھانے میں، بولنے میں، لکھنے میں بچہ کے بیرونی اعضاء میں بے چینی رہتی ہے جو اس کی حرکات سے نظر آتی ہے۔ بچہ ایک حالت میں زیادہ دیر نہیں رہ سکتا، ہر وقت پوزیشن تبدیل کرتا رہتا ہے۔ اگر بیٹھا یا لیٹا ہے تو بھی بار بار پہلو یا کروٹ بدلتا رہتا ہے۔ والدین یا گھر والے بتاتے ہیں کہ یہ نچلا نہیں بیٹھ سکتا۔ اگر صحیح علاج نہ کروایا جائے تو یہی علامات رفتہ رفتہ بڑھ کر وہ صورت اختیار کر سکتی ہیں جن کی تفصیل اوپر بیان ہو چکی ہے۔ میرے تجربے میں اِس مرض کا شکار [...]

شہریار کیوں روتا ہے؟ اِس لیے کہ اُس کا دل کرتا ہے – ہومیوپیتھک علاج – حسین قیصرانی۔

By |2019-04-01T19:12:42+05:00March 16, 2018|Categories: Children's Diseases, Homeopathic Awareness, Homeopathy in Urdu, Mental Health|

ہومیوپیتھک طریقہ علاج کی باقی طریقہ ہائے علاج سے ایک خاص انفرادیت یہ بھی ہے کہ اِس میں ہر مریض یا انسان کے مزاج کو سمجھ کر نہ صرف اُس کے موجودہ جسمانی، ذہنی، جذباتی اور نفسیاتی مسائل کو حل کیا جاتا ہے بلکہ مستقبل میں درپیش ہو سکنے والے چیلنجز کے لئے بھی تیار کرتا ہے۔ منسلکہ مختصر ویڈیو کلپ میں آپ دیکھیں کہ شہریار بے وجہ روئے جا رہا ہے۔ جب اُس سے پوچھا جاتا ہے کہ کیوں روتے ہو؟ تو وہ کہتا ہے کہ اُس کا دل کرتا ہے۔ جن بچوں کا رونے کو دل کرے یا وہ ہر چھوٹی چھوٹی بات پر رونا شروع کر دیتے ہیں؛ وہ زندگی کی دوڑ میں بہت پیچھے رہ جاتے ہیں۔ گھر میں ماں باپ یا بہن بھائی نے ذرا کچھ کہا نہیں اور اِن کے آنسو ٹپکے نہیں۔ اِسی طرح گلی محلے یا سکول میں ذرا سی اختلافی بات پر رونا شروع کردیں گے۔ کوئی کام تھوڑا سا مشکل لگے گا تو بھی مایوس ہو کر رونے لگ جائیں گے۔ دن بھر میں کچھ طاقت اور جذباتی برداشت جمع ہو گی تو وہ شام یا رات کو رو کر ختم کر دیں گے۔ اِن بچوں سے ہر [...]

February 2018

بچوں میں شدید ضد، غصہ اور تنگ مزاجی ۔ ہومیوپیتھک علاج – ڈاکٹر بنارس خان اعوان

By |2018-03-13T13:07:26+05:00February 21, 2018|Categories: Autism ASD ADHD, Children's Diseases, Homeopathic Awareness, Homeopathy in Urdu, Mental Health|Tags: |

اللہ رب العزت نے انسان کو آزاد پیدا کیا ہے، نہ تو وہ مجبور محض ہے اور نہ ہی مختار کل۔ اس لئے فخر کا باعث حسب نسب نہیں بلکہ تقویٰ ہے۔ لیکن جہاں تک بات ہے بچوں میں ذہنی نزاع کی تو وہ عام انسانی معاملات سے ذرا ہٹ کے ہے، بچوں میں ذہنی امراض ماحول کے علاوہ موروثی بھی ہو سکتے ہیں۔ نومولود بچوں اور بڑے بچوں کے ذہنی امراض میں فرق ہے۔ ایک معصوم بچہ اپنی جسمانی تکلیف کو بتا نہیں سکتا، لیکن اس کی حرکات و سکنات اور جسمانی علامات سے پتہ لگایا جا سکتا ہے۔ جدید تحقیقات کے کے مطابق بچہ ماں کے پیٹ میں ہی خوشی و غم، مالیاتی تغیر اور بیرونی معاملات کو محسوس کرنا شروع کر دیتا ہے۔نومولود بچوں پر ذہنی اثرات کو ان کے چڑچڑاپن اور بے چینی اور بے خوابی سے محسوس کیا جا سکتا ہے۔ نومولود بچوں کی بیماری کا خاصا تعلق ماں کی محبت اور زندگی کے عوامل سے ہوتا ہے۔ بعض اوقات وض حمل میں وقت سے پہلے ماں کو انجیکشن لگا دیا جاتا ہے،جس سے ماں اور بچہ دونوں کے اعصاب بری طرح متاثر ہوتے ہیں۔ یا پیدائش کے دوران بچے میں آلودگی جانے سے سانس [...]

Load More Posts